پاکستان نے جنگ قیام امن کیلئے لڑی ، امریکہ اب بھی دوست ، ڈکٹیٹ نہیں کر سکتا ہمیں کیسے چلنا ہے : ترجمان پاک فوج

پاکستان نے جنگ قیام امن کیلئے لڑی ، امریکہ اب بھی دوست ، ڈکٹیٹ نہیں کر سکتا ...

راولپنڈی ( آن لائن )ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ امریکی صدرکے بیان پرقومی ردعمل خوش آئندہے،پاکستان اورپاک فوج نے پیسوں کیلئے جنگ نہیں لڑی،افغانستان میں امن سے سب کوفائدہ ہوگا، شمالی وزیرستان میں آپریشن کیا، ضرب عضب کے تحت حقانی نیٹ ورک کیخلاف بھی آپریشن کیا، کسی آپریشن کے نتائج فوری طور پر نہیں آجاتے، اس ایکشن کے بارے میں آنے والا وقت بتاسکتا ہے۔پاکستان اپنے وقارپرسمجھوتانہیں کریگا، پاکستان اور امریکہ کومل کرآگے بڑھناہے،پاکستان اور امریکہ اب بھی دوست ہیں،پاکستان اور امریکا ایک دوسرے کے اتحادی ہیں ، اتحادیوں کے درمیان جنگ نہیں ہو سکتی،لیکن امریکہ کی طرف سے ایسا ایکشن لیا جاتا ہے تو ریاست عوامی امنگوں کو دیکھتے ہوئے ردعمل کا فیصلہ کریگی۔ بدھ کے روز نجی ٹی وی سے گفتگو میں ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ آج بھی ہماری 2لاکھ سے زائدفوج سرحدپرموجودہے، افغانستان میں ایک کھرب ڈالرخرچ کرنیکانتیجہ سب کومعلوم ہے، امرکہ نے افغانستان میں جتناخرچ کیااس کاایک فیصدپاکستان میں لگا، ایک وقت تھاہمارے پاس چوائس تھی کہ روس کے پاس جائیں۔ایک سوال کے جواب میں ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ الیکشن کا وقت قریب ہے ، سیاسی جماعتیں ایک دوسرے کے خلاف بیانات دے رہیں ہیں ، پاک فوج سیاسی عمل کا حصہ نہیں بنے گی،پہلے بھی کہا تھا کہ اسٹیبلشمنٹ کے سیاسی عمل میں ملوث ہونے کے ثبوت ہیں تو سامنے لائے جائیں ،نواز شریف کا امریکہ کیخلاف بیان بہت خوش آئند ہے ہم نے ایک زبان ہو کر بیانیہ اپنایا ہے ۔پاکستان کے حالات میں ضرورت ہے کہ ہم اکٹھے ہوکر چلیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بھارت نہیں چاہے گا کہ پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف کامیابیاں حاصل ہوں اور پاکستان کے قدم امن کی طرف بڑھتے رہیں،ہمارے قدم کامیابی کی طرف بڑھ رہے تھے تو کلبھوشن کا معاملہ آگیا،بھارت سے درپیش مسائل کے حل کے بغیر خطے میں امن مشکل ہے،نکی ہیلی کا بیک گراؤنڈ بھارتی ہے ۔ میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ پاکستان 20کروڑ سے زائد آبادی والا ذمہ دار ملک ہے۔

ترجمان پاک فوج

مزید : صفحہ اول


loading...