ملتان، سوائن فلو سے ہلاکتیں جاری‘ ایک اور مریضہ دم توڑ گئی

ملتان، سوائن فلو سے ہلاکتیں جاری‘ ایک اور مریضہ دم توڑ گئی

ملتان (وقائع نگار) نشتر ہسپتال میں سیزنل فلو( سوائن فلو) سے متاثرہ ایک اور مریضہ دم توڑ گئی ہے ، 30 سالہ کرن کا تعلق ملتان سے تھا اور لیبارٹری رپورٹس میں ان میں مرض کی تصدیق ہوچکی تھی ، اس مرض کے شبہ میں نشتر میں اب تک 56 مریض داخل کرائے گئے جن میں سے 28 اس مرض میں مبتلا پائے گئے جبکہ لیبارٹری رپورٹس میں 23 مریض نیگیٹو پائے گئے اور وہ اس مرض میں مبتلا نہیں تھے اور 5 مریضوں کی ٹیسٹ رپورٹس ابھی موصول نہیں ہوئیں، اس مرض کے باعث اب تک مجموعی طور پر 13 مریض فوت ہوچکے ہیں جن میں سے 10 کا تعلق ملتان ، 2 کا مظفرگڑھ اور ایک کا تعلق وہاڑی سے تھا ،اسی طرح سوائن فلو کے پازیٹو 28 مریضوں میں سے 18 کا تعلق ملتان ، ایک کا خانیوال ، 4 کا مظفرگڑھ ، ایک کا وہاڑی ،ایک کا راجن پور اور 3 کا تعلق لودھراں سے ہے۔دریں اثناء4 نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ظفر حسین تنویرکا کہنا ہے کہ نشتر ہسپتال میں اس وقت سیزنل فلو کے مجموعی طور پر 20 مریض داخل ہیں جن میں سے 16 ا?ئیسولیشن وارڈ اور 4 انتہائی نگہداشت میں داخل ہیں ، داخل مریضوں میں سے 9 کیسز پازیٹو ہیں اور 10 مریضوں کی رپورٹس ابھی ا?نا ہے گزشتہ روز صحت یاب ہونے پر مذید 3 مریضوں کو نشتر سے ڈسچارج کیا گیا ، ان میں ثناء4 ، سلمیٰ اور عمران نامی مریض شامل ہیں اس طرح اب تک 12 مریضوں کو حالت بہتر ہونے پر ڈسچارج کیا جا چکا ہے ، نیشنل انسٹی ٹیوٹ ا?ف ہیلتھ اسلام ا?باد سے ا?نے والی ٹیم نے نشتر کے مذید 8 لیب ٹیکنیشنوں کو ایسے مریضوں کے سیمپل لینے کی تربیت دی ہے ، این ا?ئی ایچ کی ٹیم کی جانب سے 100 مریضوں کے ٹیسٹوں کے لئے کٹس بھی نشتر کے حوالے کردی گئی ہیں اور مذید کٹس بھی جلد ہی نشتر کو موصول ہوجائیں گی۔دریں اثناء4 وزیر اعلٰی پنجاب شہباز شریف نیکہا ہے کہ ملتان میں موسمی انفلوئنزاسے شہریوں کو محفوظ رکھنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے جائیں اور مرض سے بچاو? کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کیا جائے۔ملتان میں موسمی انفلوئنزاسے پیدا ہونے والی صورتحال اور تدارک کے اقدامات کا جائزہ اجلاس گزشتہ روز لاہور میں وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کی زیر صدارت ہوا۔ اس موقع پر وزیر اعلٰی پنجاب نے کہا کہ موسمی انفلوئنزاسے بچاو? اور احتیاطی تدابیر کے حوالے سے بھرپور ا?گہی مہم چلائی جائے،متعلقہ ادارے متحرک اور فعال انداز میں فرائض سرانجام دیں۔ شہباز شریف نے مستقبل میں مرض کی بروقت روک تھام اور بچاو? کیلئے کمیٹی تشکیل دینے اوراس ضمن میں میڈیم اور لانگ ٹرم حکمت عملی مرتب کرنے کی بھی ہدایات جاری کیں۔وزیر اعلٰی پنجاب نے کہا کہ شہریوں کو موسمی انفلوئنزاسے بچانا متعلقہ اداروں کی ذمہ داری ہے۔اداروں کو چوکس رہ کر اپنی ذمہ داریاں نبھانا ہوں گی اور اس ضمن میں تساہل کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

سوائن فلو

مزید : کراچی صفحہ اول