میاں بیوی کے 20بچے لیکن جب ٹی وی شو میں شرکت کے لئے آئے تو سب کے سب نے ایسی حرکت کر دی کہ ہر شخص تعریف کرنے پر مجبور ہوگیا

میاں بیوی کے 20بچے لیکن جب ٹی وی شو میں شرکت کے لئے آئے تو سب کے سب نے ایسی حرکت ...
میاں بیوی کے 20بچے لیکن جب ٹی وی شو میں شرکت کے لئے آئے تو سب کے سب نے ایسی حرکت کر دی کہ ہر شخص تعریف کرنے پر مجبور ہوگیا

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک جوڑے کے 20بچے ہیں اور اس جوڑے کے پاس ملک کا کثیرالاولاد ترین جوڑا ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ گزشتہ روز دونوں اپنے تمام بچوں کے ہمراہ ایک ٹی وی شو میں شریک ہوئے جہاں بچوں نے ایسا کام کر دیا کہ جس نے دیکھا تعریف پر مجبور ہو گیا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 46سالہ نوئیل اور 42سالہ ’سو ریڈفورڈ‘ برطانوی شہر مورکیمب کے رہائشی ہیں۔ ان کے سب سے بڑے بچے کی عمر 28سال جبکہ سب سے چھوٹا ابھی 3ماہ کا ہے۔جب وہ ٹی وی شو میں آئے تو لگ بھگ پورا سٹوڈیو بچوں سے بھر گیا لیکن تمام بچے ایسے سدھرے ہوئے تھے کہ کسی نے کوئی نازیبا حرکت نہ کی، جس کی عموماً بچوں سے توقع کی جاتی ہے۔

’میں تندور سے خود جاکر روٹی بھی خرید سکتی ہوں لیکن پھر۔۔۔‘ پاکستانی لڑکی نے دبنگ بات کہہ دی، ہر پاکستانی مرد کو شرم سے پانی پانی کردیا

بعض بچے خاموشی کے ساتھ جہاں جگہ ملی وہیں بیٹھ کر اپنے ماں باپ کو میزبان ایمن ہومز اور روتھ لینگزفورڈ سے گفتگو کرتے دیکھتے رہے جبکہ انتہائی پرسکون انداز میں کھیلتے رہے۔ناظرین نے جب اتنی تعداد میں ایسے سلیقہ مند بچوں کو دیکھا تو ان کی اور ان کے ماں باپ کی تعریف کرنے لگے۔ ایک خاتون نے ٹوئٹر پر لکھا ہے کہ ”ان بچوں کے سلیقہ شعار ہونے پر ان کے ماں باپ تعریف کے مستحق ہیں جنہوں نے ان کی تربیت کی۔“ رپورٹ کے مطابق نوئیل اور سو نے اس شو میں اعلان کیا کہ ان کا 3ماہ کا بیٹا ان کی آخری اولاد ہے۔ اب وہ مزید بچے پیدا نہیں کریں گے۔ نوئیل کی ایک چھوٹی سی Pieکمپنی ہے جہاں وہ سموسے، پکوڑے و دیگر ایسی چیزیں بنا کر فروخت کرتا ہے۔ اس کی سالانہ آمدنی 50ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 75لاکھ روپے) ہے۔ اس نے پروگرام میں بتایا کہ حکومت کی طرف سے اسے چائلڈ بینیفٹ کے علاوہ کوئی امداد نہیں ملتی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...