سعودی عرب کے شاہ سلمان کے ہاتھ میں ایسی کون سی لکیر ہے جو دنیا کے کسی اور حکمران کے ہاتھ میں نہیں؟دست شناس کا ایسا تجزیہ جو سب کو حیران کردے

سعودی عرب کے شاہ سلمان کے ہاتھ میں ایسی کون سی لکیر ہے جو دنیا کے کسی اور ...
سعودی عرب کے شاہ سلمان کے ہاتھ میں ایسی کون سی لکیر ہے جو دنیا کے کسی اور حکمران کے ہاتھ میں نہیں؟دست شناس کا ایسا تجزیہ جو سب کو حیران کردے

  


لاہور (نظام الدولہ ) دست شناسی کے ایک طالب علم اور محقق کی حیثیت سے جب میں سعودی عرب کے عزت مآب شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے دائیں ہاتھ اور اسکی لکیروں کو دیکھتا ہوں تو اپنی بات پوری کرنے سے قاصر رہ جاتا ہوں۔ ان کے ہاتھ کا تصویری عکس جس میں وہ اپنا ہاتھ لہراتے ہوئے نظر آتے ہیں جب اسے غور سے دیکھا جائے تو صاف پتہ چلتا ہے کہ ان کے ہاتھ کی بناوٹ اور چند بنیادی لکیریں تو نظر آتی ہیں لیکن دیگر ابھاروں اور لکیروں کا جائزہ نہیں لیا جاسکتا ۔ یہ واضح کردوں کہ ہاتھوں کے جامع پرنٹ کے بغیرکسی بھی شخصیت کے انداز فکر و عمل کا مکمل جائزہ پیش نہیں کیا جاسکتا ۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے ہاتھ کی تصویر میں جو لکیریں نظر آتی ہیں ، موجودہ عہد میں کسی بڑے ملک کے حکمران اور شہنشاہ کے ہاتھ کی لکیریں ایسی نہیں ہیں۔گماں ہوتا ہے کہ ان کے ہاتھ پر دل اور دماغ کی لکیر یں الگ الگ ہونے کی بجائے یکجا ہیں اور طویل بھی ،ہاتھ اور انگلیاں پتلی ،قمر کا ابھار بھی کشادہ نہیں۔ان چند نقاط کی روشنی میں کہا جاسکتا ہے کہ ایسی لکیروں کا حامل انسان انتہائی تدبرسے کام کرنے والا ایک عمل پرست شخص ہوتا ہے جو ہمہ وقت سرگرم رہتا ہے ۔ایسے لوگ دل اور دماغ یکسو ہوکر اور پوری توجہ سے کام کرتے ہیں ۔جب کسی کودوست بناتے یا کسی پر اعتماد کرتے ہیں تو اس پر انحصار کرنے کے باوجود ایسا نظام تشکیل دیتے ہیں کہ کوئی انہیں دھوکا نہ دے سکے۔فطری طور پر تنہائی پسند ہوتے ہیں۔باریک بیں اور حساس ہونے کی وجہ سے لوگ ان کے سامنے بے احتیاطی سے گفتگو نہیں کرتے۔اپنے کاموں اورپالیسی پر سختی سے عمل کراتے ہیں۔ہنس مکھ ہوتے ہیں۔

شائبہ گزرتا ہے کہ شاہ سلمان کی تقدیر کی لکیر زندگی کی لکیر سے نکلتی ہے۔اگر ایسا ہی ہے تویہ بات انتہائی حیران کن ہے کہ انہوں نے اپنی زندگی شہزادوں کی طرح نہیں گزاری اور خودانتھک محنت سے اپنا مقام بنایا ہے۔

آپ کو دلچسپ بات بتاتے چلیں کے موجود کراو¿ن پرنس شہزادہ محمد بن سلمان کے ہاتھ کی فوٹو سے جو لکیریں نظر آتی ہیں وہ انکے مخلتف مزاج ہونے کی علامت ہیں۔لیکن شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے مماثلت رکھنے والی لکیروں والا بھی ایک شہزادہ ہے جو موجودہ کراو¿ن پرنس سے پہلے کراو¿ن پرنس نامزد تھے۔ان کا نام محمد بن نایف ہے جو شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے بھتیجےہیں ۔شاہ سلمان نے ہی انہیں کراو¿ن پرنس ،ڈپٹی وزیر اعظم اور زیر دفا ع مقرر کیا تھا ۔لیکن 21جون 2017 کو انہیں برطرف کرکے انہوں نے اپنے حقیقی بیٹے شہزادہ محمد بن سلمان کو یہ عہدے تفویض کردئےے تھے۔

شہزادہ محمد بن نایف کے ہاتھ پر بھی دل اور دماغ کی لکیریکجا نظر آتی ہے اور شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے مماثلت رکھتی ہے ،ان کا اور شاہ سلمان بن عبدالعزیز کا فطری مزاج غیر معمولی مماثلت رکھتا نظر آتا ہے ۔تاہم ان کے ہاتھ کی ساخت مختلف ہونے سے ان کا مزاج و اشغال بھی مختلف ہوسکتے ہیں۔ بعض دست شناسوں کی نظرمیں اس جیسی لکیروں کے حامل افراد میں یا تو بہت زیادہ اچھے تعلقات بندھ جاتے ہیں یا شدید اختلافات پیدا ہوجاتے ہیں۔

مزید : لائف سٹائل /مخفی علوم


loading...