”امریکی قومی سلامتی کے مشیر نے میرے منہ پر کہا کہ ’ہمارا آپ پر اعتماد بہت کم ہے “ خواجہ آصف نے آگے سے انہیں ایسا دبنگ جواب دیدیا کہ وہ اپنا سا منہ لے کر رہ گئے

”امریکی قومی سلامتی کے مشیر نے میرے منہ پر کہا کہ ’ہمارا آپ پر اعتماد بہت کم ...
”امریکی قومی سلامتی کے مشیر نے میرے منہ پر کہا کہ ’ہمارا آپ پر اعتماد بہت کم ہے “ خواجہ آصف نے آگے سے انہیں ایسا دبنگ جواب دیدیا کہ وہ اپنا سا منہ لے کر رہ گئے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان کے وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہاہے کہ امریکی صدر کے مشیر برائے قومی سلامتی میک ماسٹر سے میری ملاقات ہوئی تھی جس میں انہوں نے میرے منہ پر کہا کہ ’ آپ وعدے کرتے ہیں لیکن پورے نہیں کرتے ،ہمارا ور آپ کا ٹرسٹ لیول بہت کم ہے ‘۔ جس پر میں نے میک ماسٹر کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’آپ کا اور ہمارا ٹرسٹ لیول تو ہے ہی نہیں ،جو آپ نے گزشتہ 20 یا 30 سال میں ہمارے ساتھ کیاہے اس میں ہمارا اور آپ کا ٹرسٹ لیول کیسے ہو سکتاہے ،‘۔خواجہ آصف نے بتایا کہ جب ہم ملاقا کے بعد باہر نکلے تو واشنگٹن سے جو ہماری ٹیم میرے ساتھ گئی تھی اس نے مجھے کہا کہ ’پہلے یہ کہہ رہے تھے کہ ہمارا ٹرسٹ لیول نہیں ہے اور اب کہاہے کہ کم ہے یعنی ٹرسٹ لیول تھوڑا سا تو بڑھاہے ‘۔ خواجہ آصف نے بتایا کہ میک ماسٹر سے تقریبا بیس یا 25 منٹ کی ملاقات ہوئی تھی ۔

خواجہ آصف نے نجی ٹی وی کیپٹل ٹاک میں خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ میری ذاتی کوئی اوقات نہیں میں عوامی نمائندہ ہوں، پارلیمنٹ کی قرار داد عوام کی خواہشات کے قریب ہونی چاہیے ،پارلیمنٹ سے رسپانس عوام کی خواہشات کا عکاس ہو نا چاہیے۔ان کا کہناتھا کہ اگر ذاتی حیثیت میں ٹرمپ کے بارے میں کوئی بیان دیتاہوںتو اس کی کوئی اہمیت نہیں ہے لیکن جب میرے خواجہ آصف کے نام کے ساتھ وزیر خارجہ لگا ہو تو اس کی اہمیت ہے ،میں سمجھتاہوں کہ جب تک مجھے لیڈر شپ کی طرف منع نہیں کیا جاتا میری ٹویٹس اور بیانات ہماری حکومت کا رد عمل ہے ،اگر کوئی لال لکیر ہے تو اگر میں اسے کراس کر رہا ہوں تو وزیراعظم مجھے گفتگو سے روک دیں گے ۔

ان کا کہنا تھا کہ نکی ہیلی اور مک ماسٹر کے بیان کے بعد امریکا کا رویہ نا تو اتحادی کا ہے اور نا ہی دوست کا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ امریکا سپر پاور ہے اور وہ دنیا کے کسی بھی کونے میں پڑی ہوئی سوئی بھی دیکھ لیتے ہیں لیکن حقانی نیٹ ورک کے معاملے میں ان کی تمام ٹیکنالوجی ناکام ہو گئی ہے اور وہ کہتے ہیں کہ حقانی نیٹ ورک پاکستان سے بیٹھ کر افغانستان میں حملے کرتا ہے۔

ضرور پڑھیں: اسد عمر کی چھٹی

مزید : اہم خبریں /قومی