محکمہ خوراک اورفلورملز ایسوسی ایشن آمنے سامنے، آٹابحران کا خطرہ

  محکمہ خوراک اورفلورملز ایسوسی ایشن آمنے سامنے، آٹابحران کا خطرہ

  



ڈیرہ غازیخان (نمائندہ خصوصی) پاکستان فلورملز ایسوسی ایشن پنجاب کی ڈویثرنل باڈی کا اہم ہنگامی اجلاس سابق چیئر مین فلورملز ایسوسی ایشن پنجاب سردار حبیب الر حمن خان لغاری کی زیر صدرات ضلع مظفر گڑھ میں منعقد ہوا جس نے ڈویثرن بھر کے فلور ملز مالکان نے شرکت کی  اجلاس میں فلو رملوں کو دیئے جانے والے کوٹہ پر غور کیا گیا اس موقع پر سابق چیئر مین پاکستان فلورملز ایسوسی ایشن نے اجلاس کو بتا یا کہ اس وقت ضلع ڈیرہ غازیخان کی فلور ملوں کو پر باڈی 25بوری کوٹہ دیا جا رہا ہے جبکہ راجن پور 16، مظفر(بقیہ نمبر35صفحہ7پر)

 گڑھ 16اور لیہ کو پر باڈی 16بوری گندم فراہم کی جاری ہے جوکہ انتہائی کم ہے انہوں نے کہا کہ  محکمہ خوراک کی جانب سے خاص طور پر جنوبی پنجاب کی فلورملوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جارہا ہے جس کی  وجہ سے ڈیڑھ گھنٹہ میں فلورملز بند کرنا پڑتی ہے سردار حبیب الرحمن خان لغاری نے بتایا کہ جنوبی پنجاب گندم کی پیدوار کا اہم علاقہ ہونے کے باوجود محکمہ خوراک کی جانب سے مقامی فلو رملوں کو نظر انداز کرنا المیہ سے کم نہیں انہوں نے اجلاس کو بتایا کہ ڈویثرن بھر کی فلور ملوں کو فراہم کیا جانے والا انہتائی کم کوٹہ کے حوالے سے فلو رملز ایسوسی ایشن کا ایک  اعلیٰ اسطحی و فد وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار سے ملاقات کرکے انہیں محکمہ خوراک کے رویہ بارے آگاہ کر ے گا انہوں نے کہا کہ محکمہ خوراک فلورملز ایسوسی ایشن سے محاز آرائی کر کے حکومت کو آٹے کے بحران کی طرف دھکیل کر نا کام چاہتاہے انہوں نے واضح کیا کہ   اگر محکمہ خوراک نے اپنا قبلہ دوست نہ کیا تو ایسوسی ایشن راست اقدام پر مجبور ہو گی سردار حبیب الر حمن خان لغاری نے صوبائی ارباب اختیار اور محکمہ خوراک کو خبر دار کرتے ہوئے کہا اگر ایک ہفتہ کے اندر جنوبی پنجاب کی فلو رملوں کا کوٹہ نہ بڑ ھایا گیا تو آٹے کا شدید بحران پیدا ہو سکتا ہے جس کی تمام تر ذمہ داری محکمہ خوراک پر عائد ہو گی 

مزید : ملتان صفحہ آخر