سینیٹ، اپوزیشن کا مڈل ایسٹ کی صورتحا ل پر اعتماد میں لینے کا مطالبہ

  سینیٹ، اپوزیشن کا مڈل ایسٹ کی صورتحا ل پر اعتماد میں لینے کا مطالبہ

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)سینیٹ میں اپوزیشن جماعتوں نے حکومت سے مڈل ایسٹ کی بگڑتی صورتحال پر پارلیمنٹ کو اعتماد میں لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاہے کہ کب وزیرخارجہ سینیٹ میں پالیسی بیان دیں اور بتائیں کہ مڈل ایسٹ کی صورتحال پر پاکستان کی پالیسی کیا ہوگی؟ جبکہ  قائد ایوان شبلی فراز نے وزیرخارجہ کی ایما پر ایوان کو بتایا ہے کہ امریکا اور ایران کشیدگی پر رپورٹ مرتب کرکے ایوان میں پیش کی جائیگی۔ جمعہ کو سینیٹ کا اجلاس چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت ہوا۔ میاں رضا ربانی نے مڈل ایسٹ کی کشیدہ صورتحال کا معاملہ اٹھاتے ہوئے کہا جنرل سلیمانی کو مارنے کے بعد ایران امریکہ تنازعہ انتہائی شدت اختیار کرگیا ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان پر بھی اس تنازعہ کے اثرات مرتب ہوں گے،پاکستان کی معیشت اور قومی سلامتی پر بھی اس کا اثر ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ  وزیرخارجہ کو ہدایت کریں کہ وہ ایوان میں آکر مڈل ایسٹ کی صورتحال پر پالیسی بیان دیں اور بتائیں کہ اس صورتحال میں پاکستان کا کیا موقف ہوگا۔ سینیٹر  رضا ربانی نے کہاکہ سینیٹر اورنگزیب سے بدتمیزی  ایک نہایت سنگین مسئلہ ہے،کسی بیوروکریٹ کو کھلی چھٹی نہیں دی جا سکتی۔ رضا ربانی نے کہاکہ سینیٹر اورنگزیب خان کا نہیں بلکہ پورے ایوان کا استحقاق مجروح ہوا ہے۔قائد حزب اختلاف راجہ ظفرالحق نے کہا کہ پاکستان کے اردگرد جو حالات پیدا ہورہے ہیں اس پر وزیر خارجہ کی ایوان میں حاضری ناگزیر ہے،وزیر خارجہ ایوان کو اعتماد میں لیں جس پر چیئرمین سینٹ نے قائد ایوان شبلی فراز کو وزیر خارجہ کو ایوان میں بلانے کی ہدایت کردی۔وزیر خارجہ کی عدم موجودگی پر قائدایوان شبلی فراز نے امریکہ،ایران کشیدگی کے حوالے سے وزیر خارجہ کے ردعمل سے ایوان کو آگیا ہ کیا اور کہاکہ امریکا اور ایران کی کشیدہ صورتحال کو مانیئر کررہے ہیں، عالمی ردعمل کا جائزہ لے رہے ہیں امریکا اور ایران کشیدگی پر رپورٹ مرتب کرکہ ایوان میں پیش کریں گے۔بعد ازاں سینیٹ کا اجلاس (آج)ہفتہ کی سہہ پہر تین بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔

سینیٹ

مزید : صفحہ اول


loading...