احتساب عدالت، نوازشریف کی حاضری سے استثنی کی درخواست منظور، حمزہ، یوسف کے ریمانڈ میں توسیع

احتساب عدالت، نوازشریف کی حاضری سے استثنی کی درخواست منظور، حمزہ، یوسف کے ...

  



لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج امیر محمدخان نے چودھری شوگر ملز سکینڈل کیس میں میڈیکل رپورٹس کی بنیاد پر نواز شریف کی 17جنوری تک حاضری معافی کی استدعا منظور کر لی جبکہ آمدنی سے زائد اثاثہ جات کیس میں پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرحمزہ شہباز کے جوڈیشل ریمانڈ میں بھی 17جنوری تک توسیع کردی ہے،عدالت نے حکم دیاہے کہ آئندہ سماعت پرنواز شریف کی طبی رپورٹ بھی عدالت میں پیش کی جائے،چودھری شوگرملز کیس کی سماعت کاآغازہوتے ہی وکلاء نے بتایا کہ میاں نواز شریف کی حالت ابھی ٹھیک نہیں ہوئی ہے،ان کابیرون ملک علاج جاری ہے،جس پرعدالت نے میاں نواز شریف کی 17 جنوری تک حاضری معافی کی درخواست منظور کرلی،مریم نواز شریف کی جانب سے پلیڈر سلمان سرور عدالت میں پیش ہوئے،عدالت نے مریم نواز کے کزن یوسف عباس کے جوڈیشل ریمانڈ میں بھی توسیع کر دی،عدالت نے اس کیس میں مریم نواز کو عدالت میں ریفرنس دائر ہونے تک استثنیٰ دے رکھا  ہے،دوسری جانب آمدنی سے زائد اثاثہ جات کیس میں حمزہ شہباز کو جیل سے عدالت پیش کیا گیا،نیب پراسیکیوٹر نے تفتیش اورریفرنس سے متعلق رپورٹ عدالت میں پیش کی، جس پر عدالت نے حمزہ شہباز کے جوڈیشل ریمانڈ میں 17 جنوری تک توسیع کر تے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔دوسری طرف احتساب عدالت نے شہباز شریف فیملی کے اثاثے منجمدکرنے کیخلاف دائردرخواست پرنیب تفتیشی افسر کو 17 جنوری کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا،احتساب عدالت کے جج امیر محمد خان نے کیس کی سماعت کی، شہبازشریف فیملی کے وکلاء نے عدالت میں موقف اختیارکہ عدالت کا اثاثہ جات کو منجمد کرنے کا حکم درست نہیں،عدالت سے استدعاہے کہ اثاثہ جات منجمد کرنے کے حکم پر نظرثانی کرتے ہوئے اسے کالعدم قرار دیاجائے،جس پر عدالت نے نیب کے تفتیشی افسر کو 17 جنوری کو ریکارڈ سمیت طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

احتساب عدالت 

مزید : صفحہ اول


loading...