تھر میں سستی بجلی بنانے کے منصوبے سندھ حکومت کا تحفہ ہیں: امتیاز شیخ

تھر میں سستی بجلی بنانے کے منصوبے سندھ حکومت کا تحفہ ہیں: امتیاز شیخ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیر توانائی سندھ امتیاز احمد شیخ نے تھر میں کوئلہ نکالنے اور اس سے بجلی بنانے کے 1.3 بلین ڈالر لاگت کے منصوبوں کی مالیاتی تکمیل Financial Close حاصل کرنے پر وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی کاوشوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ 2020 کے آغاز پر جبکہ وفاقی حکومت نے عوام پر بجلی گیس اور پیٹرول کی قیمتوں میں مزید اضافوں کا بھاری بوجھ لادا ھے ایسے وقت میں سندھ حکومت کی جانب سے تھر میں 15.4 ملین ٹن سالانہ کوئلہ نکال کر اس سے 2640 میگا واٹ سستی بجلی بنانے کے نئے منصوبوں پر کام کا آغاز پاکستان کے عوام کے لئے ایک خوش آئند تحفہ ہے۔وزیر توانائی سندھ نے کہاکہ پاکستان پیپلزپارٹی اپنے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری کی رہنمائی اور وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی نگرانی میں صوبے کے قدرتی اور انسانی وسائل کو استعمال میں لاکر ملکی معیشت کے استحکام اور روزگار کے مواقعوں میں اضافے کی پالیسی پر گامزن ہے۔اس پالیسی سے ملکی وسائل پر انحصار بڑھ رہا ہے،زرمبادلہ کی بچت کی جاری ہے،روزگار کے مواقع پیدا ہورہے ہیں اور عوام کا معیار زندگی بہترہونے میں مدد مل رہی ہے۔وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ نے کہا کہ سندھ حکومت تھر کے کوئلے اور متبادل زرائع سے توانائی کے حصول کی پالیسی پر گامزن ہے۔انہوں نے تھر بلاک 6 میں کوئلے سے زرعی کھاد بنانے کے منصوبے صوبے کو بھی زرعی معیشت کے لئے ایک انقلابی اقدام فراردیتے ہوئے کہا کہ یہ منصوبہ اگلے 30 سال تک یوریا کی ضروریات پوری کرنے کا حامل ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...