مفت میں لنچ نہ کھلانے والے امریکی پاکستان پر اتنا مہربان کیوں؟ سینئر صحافی حامد میر نے تربیتی پروگرام کی توثیق پر سوال اٹھادیا

مفت میں لنچ نہ کھلانے والے امریکی پاکستان پر اتنا مہربان کیوں؟ سینئر صحافی ...
مفت میں لنچ نہ کھلانے والے امریکی پاکستان پر اتنا مہربان کیوں؟ سینئر صحافی حامد میر نے تربیتی پروگرام کی توثیق پر سوال اٹھادیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینئر صحافی حامد میر نے امریکاکی جانب سے کیلئے فوجی تربیت کے پروگرام کی بحالی کی توثیق کئے جانے پر ردعمل دیتے ہوئے سوال اٹھایا ہے کہ بتایا جائے امریکاپاکستان پر دوبارہ اتنا مہربان کیوں ہورہا ہے؟

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر دیئے گئے ایک بیان میں سینئر صحافی حامد میر نے کہا’امریکی کسی کو مفت میں لنچ نہیں کھلاتے بہتر ہو گا اہل پاکستان کو بتایا جائے کہ امریکہ دوبارہ پاکستان پر اتنا مہربان کیوں ہو رہا ہے؟‘یہ ٹویٹ حامد میر نے امریکا سے آنے والی اس خبر پر کیا ہے جس میں بتایاگیا ہے کہ امریکا نے پاکستان کیلئے فوجی تربیت کے پروگرام کی بحالی کی توثیق کردی ہے۔

یاد رہے امریکا کی وزارت خارجہ امور کے ٹویٹر اکاونٹ پر امریکی معاون نائب وزیر خارجہ ایلس ویلز کی جانب سے بیان جاری کیا  گیا ہے ۔بیان میں کہا گیاہے کہ پاکستان کیلئے فوجی تربیت کے پروگرام کی بحالی کی توثیق کردی گئی ہے۔اوراس پروگرام کی بحالی کا فیصلہ امریکا کی قومی سلامتی کے پیش نظر کیاگیا۔بیان میں مزید کہا گیاکہ دونوں ملکوں کے درمیان فوجی تعاون مزید مضبوط ہوگا، سلامتی سے متعلق دیگر معاون پروگراموں پر پابندی اب بھی برقرار ہے۔

امریکا نے تربیتی پروگرام کی بحالی کی توثیق ایران کے ایک سینئر ترین ملٹری کمانڈر کو قتل کرنے کے ایک روز بعد کی ہے۔

واضح رہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب کے ونگ القدس کے سربراہ اور طاقتور ترین لیفٹیننٹ جنرل قاسم سلیمانی کو گزشتہ روز عراق میں ایک ڈرون حملے کے ذریعے نشانہ بنا کرقتل کیاگیا۔جنرل سلیمانی کے ساتھ عراقی پاپولر موبلائزین کے ڈپٹی کمانڈر ابومہدی المہندس سمیت دیگر ساتھی بھی جاں بحق ہوئے تھے۔امریکی حملے کے بعد خطے میں کشیدگی اپنے عروج پر ہے۔

مزید : قومی /عرب دنیا