جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی خبر ٹرمپ کو دی گئی تو انہوں نے خوشی میں کیا چیز کھائی؟

جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی خبر ٹرمپ کو دی گئی تو انہوں نے خوشی میں کیا چیز ...
جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی خبر ٹرمپ کو دی گئی تو انہوں نے خوشی میں کیا چیز کھائی؟

  



واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ نے عراق میں ڈرون حملہ کرکے ایرانی پاسداران انقلاب کے میجر جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کر دیا۔ امریکی محکمہ دفاع پینٹا گون کی طرف سے جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی تصدیق سننے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے کیا کیا؟ حیران کن تفصیل سامنے آ گئی۔

میل آن لائن کے مطابق عراق میںجب ایران کے دوسرے طاقتور ترین شخص جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کرنے کے لیے آپریشن کیا گیااس وقت ڈونلڈٹرمپ اپنے مار اے لیگو کلب میں اپنے کچھ مشاہیر کے ساتھ بیٹھے تھے۔ جب انہیں اطلاع ملی کہ آپریشن کامیاب ہو گیا ہے اور جنرل سلیمانی قتل ہو گئے ہیں تو انہوں نے کلب میں ’میٹ لوف‘ (Meatloaf)اور آئس کریم کھائی۔ ان کے ساتھ موجود لوگوں میں ہاﺅس مائینوریٹی لیڈر کیوین مک کارتھی بھی شامل تھے۔ انہوں نے بھی صدر ٹرمپ کے ساتھ ان کھانوں سے ضیافت کی۔ سی این این کے مطابق صدر ٹرمپ کھانے کے لیے ہی کلب گئے تھے اور وہیں انہیں جنرل قاسم کے قتل کی تصدیق ملی۔

مک کارتھی نے اس ضیافت کی کچھ تصاویر اپنے سوشل میڈیا اکاﺅنٹ پر پوسٹ کیں اور ان کے ساتھ لکھا کہ ’آج کی شام ایک یادگار اور تاریخی شام ہے۔ مجھے اپنے صدر پر فخر ہے۔ ‘ ان تصاویر میں صدر ٹرمپ کے داماد اور مشیر جیرڈ کشنراور وائٹ ڈپٹی پریس سیکرٹری وائٹ ہاﺅس ہوگن گڈلے بھی صدر ٹرمپ اور مک کارتھی کے ہمراہ ہوتے ہیں۔“یہ پہلی بار نہیں ہوا کہ اتنی بڑی خبر جب ملی، صدر ٹرمپ کھانا کھا رہے تھے۔ 2017ءمیں جب شام کی حکومتی ایئرفیلڈ پر ایک بڑا میزائل حملہ کیا گیا۔ اس کی خبر میں صدر ٹرمپ کو اس وقت ملی جب وہ چینی صدر کے ہمراہ کھانا کھا رہے تھے۔

مزید : بین الاقوامی