شاہ محمود قریشی ایرانی وزیر خارجہ سے رابطہ کریں لیکن بات کیا کریں؟ تجزیہ کارحسن عسکری نے بتادیا

شاہ محمود قریشی ایرانی وزیر خارجہ سے رابطہ کریں لیکن بات کیا کریں؟ تجزیہ ...
شاہ محمود قریشی ایرانی وزیر خارجہ سے رابطہ کریں لیکن بات کیا کریں؟ تجزیہ کارحسن عسکری نے بتادیا

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار حسن عسکری نے کہاہے کہ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو ایران کے وزیر خارجہ سے ٹیلی فون پر بات کرنی چاہئے اور بات وہی کریں جو آرمی چیف نے پومپیو سے بات کی ہے۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”تھنک ٹینک“میں گفتگو کرتے ہوئے حسن عسکری نے کہاکہ یہ فیصلہ ہوچکا ہے کہ آرمی ایکٹ ترمیم کو پاس کرنا ہے ، سیاستدان جب اپوزیشن میں ہوتے ہیں تو قواعد اور قوانین بڑے یاد آتے ہیں اور جب اقتدار میں ہوتے ہیں تو اس کااپنا ایک مزا ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 13ویں ترمیم کوایک دن میں ہی قومی اسمبلی اور سینیٹ نے پاس کردیا تھا جبکہ 14ویں ترمیم کے موقع پر بھی یہی ہوا تھا مگر اب طریقہ کار اور پرو سیجر کی باتیں کی جارہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہماری تمام پارٹیاں سول فوجی تعلقات کو ہینڈل کرتی رہی ہیں اور ہماری تمام پارٹیوں نے اپنے فیصلے انفرادی طور پر کئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ رہبر کمیٹی کی بات یہ ہے کہ مولانا فضل الرحمان اپنی حجم سے بڑھ کر کردار ادا کرناچاہتے ہیں۔

حسن عسکری کاکہنا تھا کہ ن لیگ حالات کے مطابق فیصلے کرسکتی ہے جہاں تک سوشل میڈیا کا تعلق ہے تو ضروری نہیں کہ جو لوگ تنقید کررہے ہیں ، وہ ن لیگ کے لوگ ہوں، پارٹیوں کامستقبل اس بات میں نہیں کہ فوج کی مخالفت کریں ، پارٹیوں کا مستقبل اس بات میں ہے کہ عوم کوکس حد تک اپنے ہاتھ میں رکھ سکتی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے وزیر خارجہ کو ایران کے وزیر خارجہ سے ٹیلی فون پر بات کرنی چاہئے اور بات وہی کریں جو آرمی چیف نے پومپیو سے بات کی ہے کہ تحمل سے کام لیں لیکن ان کو یقین دلائیں کہ پاکستان ایران کے سالمیت کے حوالے سے کوئی فریق نہیں بنے گا ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور