عراق میں امریکی فوجی اڈے پر راکٹ حملہ ، 5افراد زخمی، ہلاکتوں کاخدشہ

عراق میں امریکی فوجی اڈے پر راکٹ حملہ ، 5افراد زخمی، ہلاکتوں کاخدشہ
 عراق میں امریکی فوجی اڈے پر راکٹ حملہ ، 5افراد زخمی، ہلاکتوں کاخدشہ

  



بغداد (ڈیلی پاکستان آن لائن) عراقی دارالحکومت بغداد میں بلاد کے امریکی فوجی اڈے پر دو راکٹ فائر کئے گئے جن میں متعدد فوجیوں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں، زخمی ہونیوالوں میں تین عراقی فوجی شامل ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق بلادا یئر بیس پر دوراکٹ داغے گئے جو امریکی فوجی اڈے کے قریب گرے جن کی زد میں آکر پانچ افراد زخمی ہوگئے جبکہ ہلاکتوں کاخدشہ بھی ظاہر کیاجارہاہے ۔

دوسری جانب عرب میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ بلاد ایئر بیس پر چار رکٹ داغے گئے ہیں۔برطانوی خبر ایجنسی ”رائٹرز“کے مطابق بلاد ایئر بیس پر ”کتیوشا“راکٹ داغے گئے ہیں۔خیال رہے کہ بلاد ایئر بیس بغدادمیں قائم امریکی سفارتخانے کے قریب واقع ہے ۔راکٹ حملے کے بعد امریکی سفارتخانے کی طرف جانیوالی سڑک بند کردی گئی ہے ۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ایران نے امریکہ کو انتباہ جاری کرتے ہوئے جمکران مسجد کے گنبدپر سرخ پرچم لہرا دیا ہے ۔ سرخ پرچم کو جنگ کے لئے تیار رہنے کے طور پراستعمال کیاجاتاہے جبکہ ایرانی فوج کے کمانڈر جنرل غلام علی ابو حمزہ نے کہہ چکے ہیں کہ جہاں بھی موقع ملا امریکیوں کو جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی سزا دیں گے۔ایران کی غیر سرکاری خبر رساں ایجنسی ’تسنیم‘ کی رپورٹ کے مطابق ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈر جنرل غلام علی ابوحمزہ نے کہا ہے کہ القدس فورس کے سربراہ میجر جنرل قاسم سلیمانی کی موت کا بدلہ امریکہ سے لیں گے، آبنائے ہرمز ایک اہم مقام ہے جہاں سے بڑی تعداد میں مغربی اور امریکی بحری جنگی جہاز گزرتے ہیں، اس علاقے میں ایران اہم امریکی اہداف کافی پہلے ہی طے کرچکا ہے۔انہوں نے کہا کہ خطے میں 35 کے قریب امریکی اہداف کے ساتھ ساتھ اسرائیلی دارالحکومت تل ابیب بھی ایران کے نشانے پر ہے۔

مزید : Breaking News /اہم خبریں /بین الاقوامی


loading...