غیر معمولی کیس، خفیہ ایجنسی کے حاضر سروس افسر نے میجر (ر) عادل راجہ کے خلاف برطانیہ میں ہتک عزت کا مقدمہ کردیا

غیر معمولی کیس، خفیہ ایجنسی کے حاضر سروس افسر نے میجر (ر) عادل راجہ کے خلاف ...
غیر معمولی کیس، خفیہ ایجنسی کے حاضر سروس افسر نے میجر (ر) عادل راجہ کے خلاف برطانیہ میں ہتک عزت کا مقدمہ کردیا

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے ایک سینئر فوجی افسر نے برطانیہ میں مقیم یوٹیوبر اور ریٹائرڈ فوجی افسر میجر (ر) عادل راجہ کے خلاف یوٹیوب اور ٹوئٹر پر ہتک آمیز مہم چلانے پر لندن ہائی کورٹ میں ہتک عزت اور ہرجانے کا مقدمہ دائر کیا ہے۔ ان پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے خلاف انتخابی دھاندلی میں ملوث ہونے، جنرل (ر) قمر جاوید باجوہ کے لیے ہارس ٹریڈنگ کرنے اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری  سے پنجاب کے ضمنی انتخابات میں جوڑ توڑ کیلئے خفیہ ملاقاتیں کرنے کے الزامات لگائے گئے تھے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق برطانیہ کی ہائی کورٹ میں کسی بھی حاضر سروس پاکستانی فوجی افسر کی طرف سے دائر کیا جانے والا یہ پہلا کیس ہے۔ یہ غیر معمولی کیس پاک فوج کے ایک ایسے افسر کی طرف سے دائر کیا گیا ہے جو  اس وقت صوبہ پنجاب میں ایک جاسوسی ایجنسی کے انٹیلی جنس کمانڈ کے سربراہ ہیں۔   

عدالتی کاغذات کے مطابق  میجر (ر) عادل راجہ نے 14 جون 2022 کو حاضر سروس فوجی بریگیڈیئر  کے خلاف اپنی " مہم"  کا آغاز اس وقت  کیا جب انہوں نے ایک ٹویٹ میں خفیہ  ایجنسی کے سیکٹر کمانڈر پنجاب پر الزام لگایا کہ  انہوں نے آنے والے انتخابات میں دھاندلی کے لیے 'لاہور ہائی کورٹ پر مکمل قبضہ کر لیا ہے'۔ اس کے بعد 19 جون 2022 کو، میجر (ر) عادل راجہ نے الزام لگایا کہ 'سیکٹر کمانڈر نے زرداری کے ساتھ لاہور میں موجودہ قیام کے دوران کئی ملاقاتیں کیں۔'

عدالتی دستاویزات سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ حاضر سروس فوجی بریگیڈیئر نے یہ کیس 11 اگست 2022 کو اپنے برطانیہ کے وکلاء کے ذریعے عدالت میں  دائر کیا تھا۔ مدعا علیہ میجر (ر)  عادل راجہ نے  تصدیق کرتے ہوئے کہا  ' حاضر سروس فوجی بریگیڈیئر نے میرے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ دائر کیا ہے۔'

وکلاء نے یوکے ہائی کورٹ کو بتایا ہے کہ میجر (ر) عادل راجہ نے دعویٰ دائر کرنے والے افسر  کے خلاف ایک پرعزم اور بھرپور سوشل میڈیا مہم چلائی جس میں بہت ساری ٹویٹس اور ویڈیوز شائع کی گئیں، جن میں کیے گئے بہت سے دعوے   شدید ہتک آمیز ہیں۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -برطانیہ -دفاع وطن -