گاڑی کے نیچے پھنسی برہنہ لڑکی اور ڈرائیور 25 منٹ تک گاڑی چلاتا رہا

گاڑی کے نیچے پھنسی برہنہ لڑکی اور ڈرائیور 25 منٹ تک گاڑی چلاتا رہا
گاڑی کے نیچے پھنسی برہنہ لڑکی اور ڈرائیور 25 منٹ تک گاڑی چلاتا رہا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں گاڑی کے نیچے گھسیٹ کر ایک لڑکی کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ واردات بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں ہوئی جہاں 20سالہ انجلی نامی لڑکی برہنہ حالت میں ایک گاڑی کے نیچے پھنسی ہوئی تھی اور ڈرائیور مسلسل گاڑی چلاتا رہا، جس سے انجلی کی موت ہو گئی۔

ابتدائی طور پر یہ جنسی زیادتی اور قتل کا کیس لگ رہا تھا تاہم پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی نہیں کی گئی۔ اس واقعے کے عینی شاہد نے اے این آئی کو بتایا کہ یہ پچھلی رات تین بجے کے قریب کا واقعہ ہے۔وہ اپنی دودھ کی دکان کھولنے آیا۔ ابھی وہ دکان کھول ہی رہا تھا کہ ایک کار وہاں سے گزری ، جس سے اس طرح کی آواز آ رہی تھی جیسے اس کا ٹائر پھٹا ہوا ہو۔

دکان دار بتاتا ہے کہ میں نے دیکھا تو گاڑی کا ٹائر نہیں پھٹا تھا بلکہ اس کے نیچے کوئی شخص برہنہ حالت میں اٹکا ہوا تھا۔ اس وقت یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ وہ لڑکی ہے یا لڑکا۔ میں نے پولیس کو اطلاع دی۔ چند منٹ بعد گاڑی واپس میری دکان کے سامنے سے گزری او ر اس وقت بھی اس کے نیچے لاش پھنسی ہوئی تھی۔

دکان دار کہتا ہے کہ میں نے دوبارہ پولیس والوں کو کال کی اور انہوں نے مجھے گاڑی کا پیچھا کرنے کو کہا۔ وہ مسلسل لائن پر رہے اور میں اپنی سکوٹی پر گاڑی کا پیچھا کرتا رہا۔مزید 25منٹ تک وہ شخص سڑکوں پر گاڑی گھماتا رہا، ایک بار وہ پولیس والوں کے سامنے سے گزرا اور میں نے پولیس والوں کو بتایا بھی، مگر انہوں نے اسے نہیں روکا۔ یہ دیکھ کر میں بھی واپس اپنی دکان پر چلا گیا کہ جب پولیس والے ہی نہیں پکڑ رہے تو میں کیا کر سکتا ہوں۔ صبح مجھے میڈیا سے علم ہوا کہ کار کے نیچے لڑکی پھنسی ہوئی تھی۔ 

پولیس کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ یہ ایک روڈ ایکسیڈنٹ تھا، لڑکی گاڑی کے نیچے آئی اور اس کے پچھلے ٹائر کے قریب لڑکی کی ٹانگ گاڑی میں پھنس گئی، جس کی وجہ سے وہ گھسٹتی چلی گئی۔ ڈرائیور نے خوف کے مارے گاڑی نہیں روکی۔ کئی کلومیٹر تک گھسٹنے کی وجہ سے لڑکی کے کپڑے بری طرح پھٹ گئی اور وہ نیم برہنہ ہو گئی۔ ڈرائیور کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔

مزید :

کسان پاکستان -