مسرت عالم بٹ کو سرینگر منتقل نہ کرنا قابض انتظامیہ کی سازش ہے‘محمد یوسف میر

مسرت عالم بٹ کو سرینگر منتقل نہ کرنا قابض انتظامیہ کی سازش ہے‘محمد یوسف میر

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں جموں و کشمیر مسلم لیگ کے قائم مقام چیئرمین محمدیوسف میر نے پارٹی رہنما مسرت عالم بٹ کو مسلسل غیر قانونی طور پر نظربند رکھنے اور انہیں عدالت میں پیش نہ کرنے پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق محمد یوسف میر نے سرینگر میں ایک بیان میں کہا کہ جموں کی کٹھوعہ جیل میں نظربند مسرت عالم بٹ کو پیر کے روز سرینگر کی عدالت میں سماعت کیلئے پیش ہونا تھا لیکن قابض انتظامیہ نے ایک بار پھر آئین اور قانون کی دھجیاں بکھیر کر انہیں سرینگر منتقل نہیں کیا۔انہوںنے کہا کہ قابض انتظامیہ جان بوجھ کر مسرت عالم بٹ کو سرینگر منتقل نہیں کررہی جس کا مقصد انکی غیر قانونی نظربندی کو طول دیکر انہیں جدوجہد آزادی سے دور رکھنا ہے ۔انہوںنے انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ جیلوں میں نظربند مسرت عالم بٹ اور دیگر حریت رہنماﺅں اور کارکنوں کی حالت زار کا نوٹس لیں اور انکی فوری رہائی کیلئے بھارت پر دباﺅ ڈالیں۔محمد یوسف میر نے کشمیری پنڈتوں کیلئے مقبوضہ کشمیر میں کالونیاں تعمیر کرنے کے بھارتی منصوبے کو ایک بڑی سازش قراردیتے ہوئے کہا کہ پنڈتوں کو 1990ءمیں اس وقت کے گورنر جگ موہن نے سازش کے تحت کشمیر سے نکالا تھا اور آج ایک اور سازش کے تحت کشمیر میں ان کیلئے کالونیاں بنانے کا منصوبہ بنایا گیا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ کشمیر سے نکالے گئے پنڈتوں کو واپس آکر اپنے اپنے آبائی علاقوں میں آباد ہونا چاہیے نہ کہ بھارت کے منصوبے کے مطابق نئی کالونیوں میں آباد ہونا چاہیے۔انہوںنے کہا کہ پنڈتوں کے نام پر نئی بستیاں تعمیر کرنا کشمیریوں کے خلاف ایک بڑی سازش ہے جس کو ناکام بنایا جائے گا۔

مزید : عالمی منظر