صوبائی دارالحکومت کا4ہزار میٹرک ٹن کوڑا 2 کمپنیوں کو فر وخت کیا جائیگا

صوبائی دارالحکومت کا4ہزار میٹرک ٹن کوڑا 2 کمپنیوں کو فر وخت کیا جائیگا

لاہور(جنرل رپورٹر) لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی نے شہر کا کوڑا دو پرائیویٹ کمپنیوں کو فروخت کرنے کا معاہدہ کیا ہے جس کے تحت روزانہ شہر میں پیدا ہونیوالا 6 ہزار میٹرک ٹن سے زائد کوڑے میں سے 4 ہزار میٹرک ٹن کوڑا ان دونوں کمپنیوں کو فروخت کیا جائے گا۔ ڈی جی مینجمنٹ کمپنی کو 48 روپے فی میٹرک ٹن کوڑا فروخت کیا جائے گا جبکہ پی این او ویسٹ بیریئر نامی کمپنی کو50 لاکھ روپے فی میٹرک ٹن کوڑا فروخت کیا جائے گا۔ دونوں کمپنیاں روزانہ 4 ہزار میٹرک ٹن کے قریب کوڑا خریدیں گی۔ اس حوالے سے کمپنی کے منیجنگ ڈائریکٹر وسیم اجمل چودھری سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ لاہور میں لکھو ڈیر کے مقام پر مربوط لینڈ فل سائٹ بنانے کی منظوری دے دی ہے۔ ایل ڈبلیو ایم سی اس پراجیکٹ پر ایک سال سے کام کررہی ہے۔ دوسری جگہوں کی نسبت لکھو ڈیر کا تعین لینڈ فل سائٹ کے لئے اس لیے کیا گیا ہے کیونکہ اس جگہ آبادی بہت کم ہے۔ اس سلسلے میں انوائرمنٹ پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ نے اس جگہ کا انوائرمنٹ امپیکٹ اسسمنٹ کرنے کے بعد این او سی جاری کر دیا اور 140 ایکڑ زمین کا قبضہ 10 جولائی2012ءتک ایل ڈبلیو سی کے حوالے کر دیا جائے گا۔ اس سائٹ کی تعمیر ایل ڈبلیو ایم سی کرے گی اور اس سلسلے میں تکنیکی معاونت میونسپلٹی آف استنبول کی کمپنی اسٹاچ فراہم کرے گی۔ دسمبر 2012ءتک اس سائٹ کا ڈیزائن ٹیکنیکل ڈرائینگ‘ درکار فنڈز اور ٹینڈر کا طریقہ کار وضع کرلیا جائے گا۔ جس کی تعمیر بین الاقوامی ٹینڈر کے ذریعے سے منتخب ہونیوالی کمپنی کے ذریعے کیاجائے گا۔ ایک محتاط اندازے کے تحت اس سائٹ کے مکمل ہونے کیلئے 7 ارب روپے درکار ہوں گے جس میں سے پہلے سال 1.5 ارب روپے درکار ہوں گے۔ اس سائٹ پر 2500 ٹن کوڑا کرکٹ روزانہ لایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جسے جدید ٹیکنالوجی کے تحت انرکی کی پیداوار RDF اور کمپوسٹنگ کیلئے استعمال کیا جاسکے گا۔ ایل ڈبلیو ایم سی نے کوڑا کرکٹ کے فروخت کے لئے نجی کمپنیوں سے معاہدے کیے ہیں جس کے تحت انہیں 3000 ٹن کوڑا کرکٹ روزانہ شرائط کے تحت فراہم کیا جائے گا۔ نجی کمپنیاں ماحولیاتی قوانین پر عمل پیرا ہونے کی پابند ہوں گی۔ اس سے اہالیان کو لاہور کو کوڑا کرکٹ کی مناسب طریقے سے تلفی کی سہولت میسر آئے گی۔ بلکہ صحت مند اور صاف ستھرا ماحول فراہم کیا جاسکے گا۔ اس سلسلے میں اسٹاچ کے نمائندے احمت نوری اور علی ایمان سرکاری دورے پر لاہور آئے ہوئے ہیں اور دورے کے بعد ایک رپورٹ جاری کریں گے جس کی روشنی میں مستقبل کا لائحہ عمل بنانے میں مدد ملے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1