تیونس کی سابق صدر کی اہلیہ ، لیلیٰ طرابلسی نے قوم سے معافی مانگ لی، غلطیوں کا اعتراف

تیونس کی سابق صدر کی اہلیہ ، لیلیٰ طرابلسی نے قوم سے معافی مانگ لی، غلطیوں کا ...

تیونسیا(آ ئی اےن پی ) تیونس کی سابق خاتون اول اور سعودی عرب میں جلا وطن لیلیٰ طرابلسی نے اپنی اور خاندان کی حکومت کے دور میں سرزد ہونے والی غلطیوں کا اعتراف کرتے ہوئے قوم سے معافی مانگی ہے لیکن ساتھ ہی تیونس کی موجودہ انقلابی حکومت کی طرف سے عدالتوں میں دائر مقدمات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے ان کا خاندان جعلی مقدمات کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہے۔ گزشتہ روز سابق خاتون اول نے اپنی جلا وطنی کے بعد پہلے ایک خصوصی انٹرویو میں کہا کہ کہ ان کا جلا وطن خاندان اپنے ملک میں انصاف کے حصول کے لیے بعض شرائط کی ساتھ واپس جانے کے لیے تیار ہے تاکہ وہاں پر عدالتوں میں ان کے خلاف دائر کیے گئے مقدمات کا سامنا کیا جا سکے۔ ایک سوال کے جواب میں لیلٰی طرابلسی کا کہنا ہے کہ میرے شوہر قوم سے اپنے ساتھ کیے گئے برتاو¿ پر انصاف چاہتے ہیں۔ ہمیں توقع ہے کہ قوم ہمیں ضرور انصاف دلائے گی۔ شوہر کے عہد صدارت میں سیاسی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں سابق خاتون اول نے کہا کہ میرا سیاست سے کوئی تعلق تھا نہ اب ہے۔ میری زندگی کا ایک ایک دن فلاحی اور خیراتی کاموں میں گذرتا تھا۔ فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کے مطابق لیلیٰ طرابلسی کا 14 جنوری 2011 کو اپنے شوہر کے ساتھ سعودی عرب فرار کے بعد پہلا باضابطہ انٹرویو ہے جس میں انہوں نے اپنی وطن واپسی کا عندیہ دیا ہے۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق تیونس کی خاتون اول کی جانب سے یہ انٹرویو ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب

مزید : ایڈیشن 1