دوہری شہریت نے ایم کیوایم کے ایم این اے فرحت محمود خان اور ایم پی اے نادیہ گبول کو بھی ’فارغ‘ کرادیا

دوہری شہریت نے ایم کیوایم کے ایم این اے فرحت محمود خان اور ایم پی اے نادیہ ...
دوہری شہریت نے ایم کیوایم کے ایم این اے فرحت محمود خان اور ایم پی اے نادیہ گبول کو بھی ’فارغ‘ کرادیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے دوہری شہریت کیس میں ایم کیو ایم کے ممبر قومی اسمبلی فرحت محمود خان اور ممبر سندھ اسمبلی نادیہ گبول کی رکنیت معطل کردی ہے ۔ دوہری شہریت کیس میں چیف جسٹس نے کہا ہے کہ شہریت اور قومیت میں کوئی فرق نہیں ہے وہ قانون لاکر دکھا ئیں جس سے شہریت اور قومیت الگ ثابت ہوجائیں۔چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا تین رکنی بنچ دوہری شہریت کیس کی سماعت کررہاہے ۔سماعت کے دوران معطل ہونے والے رکن قومی اسمبلی ملک جمیل اعوان کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ہالینڈ میں شہریت کا کوئی تصور ہی نہیں ہے وہاں قومیت ہوتی ہے ۔ان کا کہنا تھاکہ ہالینڈ کی قومیت پاکستان میں الیکشن لڑنے سے منع نہیں کرتی جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ وہ قانون لا کر دکھا ئیں جس سے شہریت اور قومیت الگ الگ ثابت ہوجائیں۔انہوں نے استفسارکیا کہ کیا ملک جمیل نے کاغذات جمع کراتے وقت ہالینڈ کی قومیت کا ذکر کیا تھا ؟جسٹس خلجی عارف نے کہا کہ وہ جس طرح کے دلائل دے رہے ہیں برداشت کر رہے ہیں۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا کہ وہ سمجھ نہیں پا رہے کہ شہریت اور قومیت میں کیا فر ق ہے ، زبانی بات ماننے سے قاصر ہیں۔انہوں نے کہا کہ وہ فلسفے کو نہیں قانون کو دیکھیں گے جس پر ملک جمیل اعوان کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے پاس صرف ہالینڈ کے نیشنل ایکٹ کی کاپی ہے اس کے سوا اور کچھ نہیں ہے۔ ایم کیو ایم کے ممبر قومی اسمبلی فرحت محمود خان نے امریکی شہریت اور نادیہ گبول نے برطانوی شہریت رکھنے کا اعتراف کیاجس پر عدالت نے دونوں کی اسمبلی رکنیت معطل کردی ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں /Breaking News