مدرسہ حقانیہ کو 30کروڑ دینا نیشنل ایکشن پلان کے منافی ہے،اے ٹی آئی

مدرسہ حقانیہ کو 30کروڑ دینا نیشنل ایکشن پلان کے منافی ہے،اے ٹی آئی

  

لاہور(خبر نگار) انجمن طلباء اسلام کے مرکزی صدر عاکف طاہر ،مرکزی سیکریڑی جنرل ریحان طاہر قادری اور دوسرے رہنماؤں سید وقار علی ،سید بو علی شاہ۔محمد اکرم رضوی ،عامر اسماعیل ،عزیز احمد بخاری ،طیب شیخ نے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ مدرسہ حقانیہ کو 30کروڑ دینا نیشنل ایکشن پلان کے منافی ہے۔خیبر پختونخواہ حکومت ایک مدرسہ کو 30کروڑ دینے کے بجائے صوبے کے تمام مدارس کو یکساں فنڈز فراہم کرے۔افغان مہاجرین کی واپسی کیلئے خیبر پختونخواہ حکومت کا مؤقف جائز ہے۔محمود اچکزئی کے خلاف غداری کا مقدمہ درج ہو نا چاہیے ۔حکومت اپنے اتحاد ی کا کب احتساب کرے گی ۔محمود اچکزئی کے بیان سے محب وطن پاکستانیوں کے سرشرم سے جھک گے ہیں ۔محمود اچکزئی کو پاکستان سے زیادہ افغانستان سے پیار ہے تو وہاں چلا جائے ۔ امجد صابری کے قتل اور اویس شاہ کے اغوا سے کراچی آپریشن کو دھچکا لگا ہے حکومتی نااہلی کی وجہ سے دہشتگردی کے خلاف جیتی ہو ئی جنگ ہار میں تبدیلی ہونے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔مظلوم فلسطینی مسلم حکمرانوں کی طرف امید بھری نگاہوں سے دیکھ رہے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -