رمضان المبارک کے آخری آیام ،لاہوریوں نے بدپرہیزی کے سابق تمام ریکارڈ توڑ دئیے

رمضان المبارک کے آخری آیام ،لاہوریوں نے بدپرہیزی کے سابق تمام ریکارڈ توڑ ...

  

لاہور(خبرنگار) رمضان المبارک کے آخری آیام ،لاہوریوں نے بدپرہیزی کے سابق تمام ریکارڈ توڑ دیے ۔شہرکے ہسپتالوں میں گیسٹرو کے مریضوں کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ،ادویات کی کمی نے محکمہ صحت کی کارکردگی کا پول کھول دیا ۔2ہزار سے زائد مریض ہسپتالوں میں داخل ہو گئے ۔تفصیلات کے مطابق صوبائی دارلحکومت کے ہسپتالوں میں گیسٹرو اور بدپرہیزی کر نے والے روزہ داروں نے ڈیرے ڈال لیے ہیں ۔رمضان المبارک کے دنوں میں لاہوریوں نے خوب پیٹ بھر کر افطاریاں کی جس کے باعث روزہ داروں کی ایک بڑی تعداد ہسپتالوں میں پہنچ گئی۔گزشتہ روز جناح ہسپتال میں 189، سروسز ہسپتال 182،شیخ زید ہسپتال 185،لاہورجنرل ہسپتال 177،سرگنگا رام ہسپتال 172، واپڈا ہسپتال کمپلیکس171گورنمنٹ نواز شریف سوشل سکیورٹی ہسپتال 175،گورنمنٹ سید مٹھا ہسپتال 162، کوٹ خواجہ سعید ہسپتال 159،گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال شاہدرہ 153،گورنمنٹ نواز شریف ہسپتال یکی گیٹ 148،گورنمنٹ مزنگ ہسپتال 99، ڈاکٹرز ہسپتال74اور ماڈل ٹاؤن کواپریٹو سوسائٹی ہسپتال ماڈل ٹاؤن 55مریضوں کو علاج معالجہ کی غر ض سے لے جایا گیا لیکن سروسز ہسپتال، کوٹ خواجہ سعید ہسپتال ،شاہدرہ ہسپتال سمیت ماڈل ٹاؤن سوسائٹی ہسپتال میں مریضوں کوادویات کے حصول میں دشواری کاسامنا کرنا پڑ ا جس سے محکمہ صحت کی کارکردگی کاپول کھل گیا ۔اگلے دو تین روزمیں عید کی چھٹیاں ہونے کو ہیں اور عید کے دنوں میں بھی ایک دفعہ پھر گیسٹرو کا مرض اپنے عروج پر جائے گا جس کے لیے محکمہ صحت کو اپنے ہسپتالوں میں پہلے سے انتظامات کا جائزہ لینا ہو گا تاکہ چھٹیوں میں مریضوں کو کسی قسم کی دشواری کا سامنا نا نہ کر نا پڑ ے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -