تربیلا ڈیم توسیعی منصوبہ ، شٹرنگ کرنے سے 3انجینئر سمیت 6افراد جاں بحق ، 20زخمی

تربیلا ڈیم توسیعی منصوبہ ، شٹرنگ کرنے سے 3انجینئر سمیت 6افراد جاں بحق ، 20زخمی

  

 صوابی (بیورورپورٹ)تربیلہ ڈیم کے نئے پاور ہاؤس کے چوتھے توسیعی منصوبے پر چائینہ کمپنی سائینو ہائیڈروکے زیر نگرانی تعمیراتی کام کے دوران شٹرنگ گر جانے سے تین چینی انجنئیرزسمیت چھ افراد جاں بحق جبکہ 20سے زائد زخمی ہوگئے ۔بتایاگیاہے کہ ہفتہ اوراتوار کی درمیانی شب تقریباً بارہ بجے تربیلہ ڈیم کے نئے پاور ہاؤس کی تعمیر کے چوتھے توسیعی منصوبے پر کام کے دوران شٹرنگ گرگئی جس کے ملبے تلے دب جانے سے تین چینی سائیڈ ا نجینئر وانگ پاشی ، ہومن پا ایک نامعلوم چینی باشندے کے علاوہ دوپاکستانی انجنئیرزعبدالقدیر حسین ولد محمد صدیق اورشاہد رضا ولد ساقی شاہ، ساکنان لیہ ضلع پنجاب اور طارق سکنہ رحیم یار خان جاں بحق جبکہ بیس محنت کش اور سائیڈ انجنئیرز شدیدزخمی ہوگئے زخمیوں جن میں چینی انجینئرز لی وانگ یو ، لوبیا وان ، پاکستانی محنت کش ابو بکر اور محسن بھی شامل ہیں کو تربیلہ ڈیم ،ٹوپی اور صوابی کے ہسپتالوں کو فوری طور پر منتقل کردیاگیا ۔چوتھے توسیعی منصوبے کی تعمیراتی کا ٹھیکہ چائنہ کمپنی سائینو ہائیڈرو کے پاس ہے اس میں کافی تعدادمیں چینی انجنئیرزدن رات خدمات انجام دے رہے ہیں شٹرنگ اس وقت گر گئی جب مزدور پاورہاؤس کے تعمیراتی کام کے دوران ایک ہزار میٹر شٹرنگ ڈال رہے تھے ۔ جب آٹھ سو میٹر تک کام مکمل ہو گیاتو شٹرنگ اچانک گر گیاجس کے ملبے تلے درجنوں مزدور دب گئے ڈی پی اوصوابی جاویداقبال خان بمعہ پولیس نفری جائے حادثہ پرپہنچ گئے شٹرنگ گرنے کی اطلاع ملتے ہی تربیلہ ڈیم اورپاورہاؤس میں کام کرنے والے محنت کش ،ریسکیو اہلکار اوردیگر امدادی ٹیمیں موقع پرپہنچی اورملبے ہٹانے کاکام شروع کردیا ملبے سے چھ لاشیں برآمد ہوئی جبکہ بیس سے زائد زخمیوں کو زندہ نکالاگیاملبے ہٹانے کاکام اتوار کی دو پہر گیارہ بجے تک مکمل ہوا#

مزید :

صفحہ اول -