آؤٹ آف ٹرن پروموشن کیس ، لاہور کے 24ایس ایچ اوز ، 36انچارج انویسٹی گیشن عہدوں سے فارغ

آؤٹ آف ٹرن پروموشن کیس ، لاہور کے 24ایس ایچ اوز ، 36انچارج انویسٹی گیشن عہدوں ...

  

 لاہور(بلال چودھری) پنجاب پولیس نے آؤٹ آف ٹرن پروموشن حاصل کرنے والے صوبائی دارالحکومت کے 24 ایس ایچ اوز اور 36 انچارج انویسٹی گیشن کو عہدوں سے ہٹا دیا گیا ۔دوسری جانب اتنی بڑی تعداد میں ایس ایچ اوز کو عہدوں سے ہٹانے پر شہر میں سیکیورٹی رسک پیدا ہو گیا ۔ذرائع کے مطابق آوٹ آف ٹرن پروموش پانے والے صوبائی دارالحکومت کے 24ایس ایچ اوز اور 36انچارج انویسٹی گیشنز کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے ۔عہدہ سے ہٹائے گئے ایس ایچ اوز میں اکبری گیٹ کے زاہد حسین ،شاہدرہ ٹاؤن کے محمد جاوید ،شادباغ کے مدثر اللہ ،پرانی انارکلی کے نثار احمد ،مغلپورہ کے ظہیر الدین ،ساوتھ کینٹ کے قمر عباس ،برکی کے نوید اعظم ،ہیئر کے محمد اشفاق ،ہڈیارہ کے محمد رضا ،نصیر آباد کے وسیم اختر ،چوکی فردوس مارکیٹ کے حبیب احمد ،چوکی راجہ مارکیٹ کے قاسم عباس ،کاہنہ کے احسان اشرف ،اقبال ٹاؤن کے محمد سروز ،قائد اعظم انڈسٹریل سٹیٹ کے حافظ عبدالمجید کو عہدہ سے ہٹا کر سب انسپکٹر بنا دیا گیا ہے جبکہ اسی طرح سے انچارج چوکی سگیاں عبد الرشید اور ایس ایچ او قلعہ گجر سنگھ ناصر خان کو عہدہ سے ہٹا کو اسسٹنٹ سن انسپکٹر بنا دیا گیا ہے ۔ایس ایچ او یکی گیٹ عابد مختار ،موچی گیٹ کے ارشد محمود ،لاری اڈہ کے شرافت علی ،مزنگ کے عاصم مجید ،ویمن ریس کورس کی بشری عزیز اور ساندہ کے خالد فاروق کو عہدہ سے ہٹا کو کانسٹیبل کردیا گیا ہے ۔یاد رہے کہ اس سے پہلے آؤٹ آف ٹرن پروموشنز کے معاملے میں پہلے بھی ایس پیز اور ڈی ایس پیز کو عہدوں سے ہٹا دیا گیا تھا۔ عید کی آمد اور رمضان کے آخری عشرہ میں اچانک لاہور پولیس میں بڑے پیمانے پر ایس ایچ اوز کو عہدوں سے ہٹانے پر شہر میں سیکیورٹی رسک پیدا ہو گیا ہے ۔اس حوالے سے پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ شہر میں خالی ہونے والے تھانوں اور انچارج انویسٹی گیشن کی آسامیاں کل پر کی جائیں گی۔

مزید :

علاقائی -