ڈاکٹروں نے اس کی بیماری کو لاعلاج قرار دے دیا تھا لیکن پھر اسنے یہ مشروب پیا اور اس کی بیماری بالکل ختم ہوگئی

ڈاکٹروں نے اس کی بیماری کو لاعلاج قرار دے دیا تھا لیکن پھر اسنے یہ مشروب پیا ...
ڈاکٹروں نے اس کی بیماری کو لاعلاج قرار دے دیا تھا لیکن پھر اسنے یہ مشروب پیا اور اس کی بیماری بالکل ختم ہوگئی

  

نیویارک(نیوزڈیسک)کینسر ایک ایسا مرض ہے جس کا علاج ابھی تک دریافت نہیں ہوسکا اور ڈاکٹر بھی اس کے سامنے بے بس ہوجاتے ہیں لیکن اس آدمی نے کینسر ہونے کے بعد ایسا مشروب کا استعمال کیا کہ کچھ ہی دن میں یہ ٹھیک ہوگیا اور ڈاکٹر بھی اس کی صحت دیکھ کر حیران رہ گئے۔

کینسر کے علاج کے لئے کیموتھراپی کی جاتی ہے جو کہ انتہائی تکلیف دہ عمل ہے اور اس کی وجہ سے مریض علاج سے بھاگنے لگتے ہیں۔ایک کروشین آنتی کریسیچ کو 13سال قبل پھیپھڑوں کاکینسر تشخیص کیا گیااور ڈاکٹروں نے اسے بتایاکہاس کے پاس زیادہ وقت نہیں بچا۔اس نے ڈاکٹروں کو یکسر غلط ثابت کردیا اور شہد اور قدرتی اجزاءکی مدد سے ایسا مشروب بنایاکہ اب وہ بالکل بھلا چنگا ہے۔اس کاکہنا ہے کہ اس نے شہدمیں ادرک اور اس طرح کی قدرتی جڑی بوٹیاں ڈالیں اور اس مشروب لے استعمال سے اس کا کینسر ٹھیک ہوگیا۔بوسنیا سے تعلق رکھنے والی ایک اور خاتون نے شہد اور ادرک کی مدد سے اپنے جسم میں بننے والے کینسر کو شکست دی۔اس کا کہنا ہے کہ دو بڑے ادرک لے کر انہیں آدھ کلو قدرتی شہد میں ڈالیں ۔اس مکسچر کو شیشے کے جار میں رکھیں اور روزانہ کھانے کا چمچ تین سے چار بار استعمال کریں۔آپکو چاہیے کہ شہد کھاتے ہوئے لکڑی یاپلاسک کے چمچ کا استعمال کریں اور دھاتی چمچ سے پرہیز کریں۔صرف چار دن بعد آپ کو واضح فرق نظر آنے لگے گا۔اس دوران اپنے اندر مثبت تبدیلی رکھیں اور منفی خیالات سے دور رہیں۔

مزید :

تعلیم و صحت -