جھوک اترا،دریاء سندھ کے کٹاؤ سے نواحی علاقوں میں تباہی ، فصلیں متاثر

جھوک اترا،دریاء سندھ کے کٹاؤ سے نواحی علاقوں میں تباہی ، فصلیں متاثر

  

جھوک اترا(نمائندہ پاکستان)جھوک اترا کے نواحی علاقوں ملکانی کلاں ،مونڈے والا،حاجی کماند ،بستی رندان ،جکھڑ امام شاہسمیت دریا علاقوں میں دریا سندھ میں شدید طغیانی کے باعث کٹاؤبڑھنے سے زرعی اراضیات دریا برد ہونے لگیں ہیں مذکورہ علاقوں میں حفاظتی بندوں ،سٹڈز وسپر بندوں پر دباؤ بڑ ھ چکاہے ملکانی کلاں سپر بند،رند والا سٹڈ سمیت دیگر بندوں کو دریا سندھ ایپرن کاٹنے کے باعث(بقیہ نمبر38صفحہ12پر )

کمزور بنا دیا ہے چار روز قبل ملکانی کلاں سپر بند اور نزدیکی رند والا سٹڈ کو شدید کٹاؤ نے گھیر لیا اور ملکانی سپر بند کی سو فٹ تک بیس فیٹ چوڑی ایپرن کٹاؤ کی نظر ہو چکی اور رند والا سٹڈ کی بھی پچاس فٹ تک ایپرن دریا برد ہو چکی ہے میڈیا و مکینوں کی محکہ ایریگیشن کو نشاندہی پر نزیکی سپر بند پر کام کرنے والے ٹھیکیدار و عملہ کو ایمرجنسی طور بھیج دیا گیا جنہوں نے ملکانی کلاں سپر بند کے تحفظ کیلئے پندرہ فٹ تک نیا حفاظتی سٹڈ قائم کر کے عارضی طور پر پانی کا رخ تبدیل کر دیا ہے اسی طرح سٹڈ رند والا کی بھی مرمت کا کام شروع کر دیا ہے وائس چیئر یوسی ہزارہ محمد ذیشان ملکانی سماجی رہنماء سیف اللہ ملکانی نے صحافیوں کو بتایا کہ محکمہ ایریگیشن کے آفیران نے ہنگامی بنیادوں پر سپر بند اور سٹڈ کا عاری طور پر تحفظ کر لیا ہے تاہم عید کی چھٹیوں کے بعد مزید کام کی ضرورت ہے دیگر علاقوں اور سپربندوں کے تحفظ کیلئے ملکانی کلاں سپر بند کا تحفظ ضروری ہے اسی طرح جکھڑامام شاہ سپر بند ،بستی رندان سپر بنداور سیوڑہ والا نمبر 1 سپر بند پر خطیر گرانٹ کے زریعے نیسپاک و محکمہ ایریگیشن کی زیر نگرانی تیزی سے کام جاری ہے تاہم پانی کے بہاؤ میں تیزی کے باعث حفاظتی اقدامات کیلئے مشکلات کا سامنا ہے سپر بند مونڈے والا ، سٹد مونڈے والا،سٹڈ تھتھل والا ، سپر بند میرانی ،نور پور،بیٹ کبھڑ،بیٹ چین والا،پتی چھجو،پتی میر میرانی،پتی سکھانی و بیٹ بیت والاکے علاقے کٹاؤ کی زد میں ہیں علاقہ مکینوں سیاسی و سماجی حلقوں نے ایریگیشن حکام وانتظامیہ سے فوری نوٹس لیتے ہوئے اقدامات کا مطالبہ کیاہے۔

کٹاؤ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -