تربیلامیں شٹرنگ گرنے سے ہلاکتیں 8 ہوگئیں، 6 انجینئرز شامل

تربیلامیں شٹرنگ گرنے سے ہلاکتیں 8 ہوگئیں، 6 انجینئرز شامل
تربیلامیں شٹرنگ گرنے سے ہلاکتیں 8 ہوگئیں، 6 انجینئرز شامل

  

ہری پور (ویب ڈیسک) تربیلا ڈیم کے توسیعی منصوبے ٹی فور کی شٹرنگ گرنے سے ہلاک ونے والوں کی تعداد 8 ہوگئی جس میں 6 چینی انجینئرز بھی شامل ہیں۔ چیئرمین واپڈا نے پراجیکٹ حکام سے تین دن کے اندر شٹرنگ کرنے کی وجوہات کے بارے میں تفصیلی رپورٹ طلب کرلی۔ گزشتہدنوں ہری پور کے علاقے تربیلا میں تربیلا ڈیم کے توسیعی منصوبے ٹی فور پر کام کرنے والے افراد پر شٹرنگ گرگئی تھی جس کے نتیجے میں منصوبے پر کام کرنے والے 3 چینی انجینئرز ہلاک جبکہ 20 زخمی ہوگئے تھے۔

ریسکیو اہلکاروں اور مقامی افرادنے زخمیوں کو طبی امداد کے لئے ہسپتال منتقل کیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے مزید 3 چینی انجینئرز اور 2 مقامی افراد دم توڑ گئے۔ وزیراعظم نواز شریف نے چینی انجینئرز کی ہلاکت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں سے ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ توانائی اور انفراسٹرکچر منصوبوں پر چینی انجینئرز کی خدمات قابل تعریف ہیں، تعاون پر چین کی حکومت اور عوام کے شکر گزار ہیں۔ وزیراعظم نواز شریف نے توانائی منصوبوں پر کام کرنے والے چینی انجینئرز کا تحفظ یقینی بنانے کی بھی ہدایت کی۔ واپڈا کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 1410 میگا واٹ پیداواری صلاحیت کے حامل تربیلا کے چوتھے توسیعی پن بجلی منصوبے کی تکمیل کے لئے ”تیز تر تعمیر پروگرام“ کے تحت 24 گھنٹے تعمیراتی کام جاری رہتا ہے۔

دو جولائی کو رات تقریباً 11 بجے منصوبے پر تعمیراتی کام کے دوران یونٹ نمبر 17 کی زیریں جانب کنکریٹ ڈالنے کا عمل جاری تھا کہ کنکریٹ ڈالنے کے لئے لگائی گئی شٹرنگ گرگئی۔ شٹرنگ گرنے کے فوراً بعد امدادی کارروائی کا آغاز کردیا گیا۔ بدقسمتی سے اس حادثہ میں 2چینی بھی شامل ہیں۔ زخمیوں کو فوری طور پر کمبائنڈ ملٹری ہسپتال (سی ایم ایچ) تربیلا لیجایا گای جبکہ ایک شدید زخمی چینی کارکن کو علاج کے لئے اسلام آباد منتقل کردیا گیا ہے۔ چیئرمین واپڈا نے پراجیکٹ حکام سے شٹرنگ گرنے کی وجوہات کے بارے میں تفصیلی رپورٹ تین دن کے اندر طلب کی ہے۔

مزید :

ہری پور -