اقوام متحدہ کی گاڑی میں خاتون سے جنسی زیادتی کرنے والے دو اہلکار معطل

اقوام متحدہ کی گاڑی میں خاتون سے جنسی زیادتی کرنے والے دو اہلکار معطل
اقوام متحدہ کی گاڑی میں خاتون سے جنسی زیادتی کرنے والے دو اہلکار معطل

  

نیو یارک(ڈیلی پاکستان آن لائن)اقوام متحدہ کی گاڑی میں جنسی عمل کرنے والے دو اہلکاروں کو بغیر تنخواہ جبری چھٹی پر بھیج دیا ہے۔اقوام متحدہ کے دونوں اہلکاروں کو اسرائیلی شہر تل ابیب میں ایک مرکزی سڑک پر اقوام متحدہ کی گاڑی میں فلمایا گیا تھا۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سرخ لباس میں ملبوس ایک عورت کار کی پچھلی سیٹ پر ایک آدمی کے ساتھ جنسی عمل میں مصروف ہیں۔

 واقعہ کی 18 سیکنڈز مبنی ویڈیو گذشتہ ماہ سوشل میڈیا پر وسیع پیمانے پر شیئر ہوئی۔ اس کے بعد اقوام متحدہ نے تحقیقات کا آغاز کیا۔ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کے ترجمان نے کہا کہ فوٹیج سے وہ حیران اور شدید پریشان ہیں۔اب اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ ویڈیو میں نظر آنے والے افراد کی شناخت ہوگئی ہے۔ وہ اقوام متحدہ کے ٹروس نگرانی تنظیم کے ارکان ہیں اور ان کی تعیناتی اسرائیل میں اقوام متحدہ کے فوجی مبصرین کے طور پر کی گئی ہے۔اس واقعے کی تحقیقات کا نتیجہ آنے تک دونوں افراد کو بغیر تنخواہ معطل کردیا گیا ہے۔ترجمان نے جمعرات کو برطانوی نشریاتی ادارے کو بتایا کہ بین الاقوامی ادارے کے ملازمین سے لوگ بہتر طرز عمل کی توقع کرتے ہیں اور اس معیار پر پورا نہ اترنے کو پیش نظر رکھتے ہوئے ان کی معطلی مناسب ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -