ملک میں مہنگائی کی شرح میں 2.29 فیصد اضافہ، ادارہ شماریات

ملک میں مہنگائی کی شرح میں 2.29 فیصد اضافہ، ادارہ شماریات

  

اسلام آباد(آن لائن) گزشتہ ایک ہفتے کے دوران مہنگائی کی شرح میں 2.29 فیصد اضافہ ہوا۔ میڈیارپورٹس کے مطابق ملک میں مہنگائی کی شرح میں اضافے کا رجحان جاری ہے اور گزشتہ ایک ہفتے کے دوران مہنگائی کی شرح میں 2.29 فیصد اضافہ ہوا، ایک ہفتے کے دوران، انڈے، ٹماٹر، چکن، پیاز، چینی، آٹے اور پٹرولیم مصنوعات سمیت 18 اشیاء مہنگی ہوئیں، دال چنا، دال مسور، آلو اور لہسن سمیت 7 اشیاء سستی ہوئیں، جب کہ 26 اشیاء کی قیمتیں مستحکم رہیں۔اس حوالے سے وفاقی ادارہ شماریات نے اعداد و شمار جاری کردیئے ہیں جس میں بتایا گیا ہے کہ حساس قیمتوں کے اشاریہ کے لحاظ سے سالانہ بنیادوں پر مہنگائی کی شرح بڑھ 9.77 فیصد ہوگئی، وفاقی ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ مہنگائی میں اضافہ اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ کی وجہ سے ہوا۔اعداد وشمار کے مطابق ایک ہفتے میں چینی کی قیمت میں 24 پیسے فی کلو اضافہ ہوا، سرخ مرچ 19 روپے، ٹماٹر 11 روپے فی کلو، انڈے ڈھائی روپے فی درجن، مرغی کا گوشت ساڑھے 4 روپے، دال ماش ایک روپے، 20 کلو آٹے کا تھیلا 6 روپے، ایل پی جی کا گھریلو سلنڈر 68 روپے منہگا ہوا، جب کہ پیٹرول، ڈیزل، چینی، چاول، پیاز،گوشت بھی مہنگا ہوا۔ادارہ شماریات کی رپورٹ کے مطابق حالیہ ہفتے میں 7 اشیاء کی قیمتوں میں کمی ہوئی، دال مونگ 6 روپے،دال مسور ایک روپے، لہسن 4 روپے فی کلو، اور کیلے ڈیڑھ روپے فی درجن سستے ہوئے

ادارہ شماریات

لاہور(نمائندہ خصوصی)جمعیت علماء پاکستان کے وفد نے علامہ قاری محمد زوار بہادر کی قیادت میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق سے منصورہ میں ملاقات کی وفد میں حافظ نصیر احمد نورانی، رشید احمد رضوی،مفتی تصدق حسین اور مفتی جمیل رضوی بھی شامل تھے۔جمعیت کے وفد نے جماعت اسلامی کے سابق امیرسید منورحسن کے انتقال پر سراج الحق اور جماعت اسلامی کے دیگرقائدین سے اظہار تعزیت کیااور منور حسن کی جماعت اسلامی کے لئے خدمات اور ملک میں اسلامی جماعتوں میں ہم آہنگی کیلئے ان کے کردار کو خراج تحسین پیش کیا اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے ملکی اور مقبوضہ کشمیر کی صورت حال پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں بدترین ظلم جاری ہے 3 سالہ ننھے عباد کے سامنے اس کے نانا کا فوج کے ہاتھوں قتل پوری دنیا کے لئے لمحہ فکریہ ہے اقوام عالم کے نام نہاد انسانی حقوق کے علمبردار مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں، بوڑھوں، خواتین اور بچوں کے قتل عام پر آنکھیں بند کیے ہوئے ہیں پاکستانی قوم اپنے کشمیری بہن بھائیوں کے قتل عام پر مزید خاموش نہیں رہ سکتے۔مقبوضہ وادی میں گزشتہ 11 ماہ سے بھارتی افواج ظلم کی نئی تاریخ رقم کررہی ہے۔مقبوضہ وادی کے عوام بھوک اور ادویات کی کمی کا شکار ہو کر موت کی وادی میں جارہے ہیں۔ عالم اسلام بھی ان مظلوم مسلمانوں کے لیے کچھ نہیں کرسکا۔ جو اسلامی ممالک کے لیے باعث شرم ہے۔ قائدین نے کہا کہ لداخ میں چینی افواج کے ہاتھوں بدترین ذلت اُٹھانے کے بعد مودی حکومت پاکستان پر حملے کی تیاری کررہی ہے۔اگر بھارت نے ایسی غلطی کی تو مسلح افواج اور پاکستانی قوم مل کربھارت کو تاریخ کا بدترین سبق سکھائیں گے۔جس سے اس کی نسلیں یاد رکھیں گی۔دونوں جماعتوں کے قائدین سراج الحق اور علامہ قاری زوار بہادر نے اسلام آباد میں مندر کی تعمیر کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم کااسلام آباد میں مندر کی تعمیر کو فوراً روک دیں ورنہ اس کی تمام تر نتائج کے ذمہ دار حکمران ہونگے۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -