پنجاب مسلم لیگ (ن) خیبر پختونخوا پی ٹی آئی، سندھ پی پی، بلوچستان بی اے پی کا گڑھ

پنجاب مسلم لیگ (ن) خیبر پختونخوا پی ٹی آئی، سندھ پی پی، بلوچستان بی اے پی کا ...

  

اسلام آباد (آئی این پی) کل انتخابات کرائے جائیں تو عوام کسے ووٹ دیں گے؟ اس کا جواب سامنے آگیا۔ عوام نے پنجاب میں پاکستا ن مسلم لیگ (ن)،خیبرپختونخوا میں تحر یک انصاف، صوبہ سندھ میں پاکستان پیپلزپارٹی اور بلوچستان میں بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دینے کیلئے پسند کیا۔ انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ (آئی پی او آر) کے سر و ے میں یہ سوال پوچھاگیا تھا کہ اگر کل انتخاب کرایا جائے تو وہ کسے ووٹ دیں گے، اس عوامی رائے پر سیاسی جماعتوں کی مقبولیت کا گراف دیاگیا ہے جس کے مطابق صوبہ پنجاب میں 42 فیصد عوام نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو ووٹ دینے کی رائے دی۔ تحریک انصاف کو 23 فیصد لوگوں نے ووٹ دینے کی خواہش کا اظہار کیا جبکہ پاکستان پیپلزپارٹی 5، تحریک لبیک 2، مسلم لیگ (ق) ایک فیصد ووٹ کی حقدار پائیں۔ سروے کے مطابق صوبہ خیبرپختونخوا میں اب بھی پاکستان تحریک انصاف مقبولیت میں سب سے آگے ہے۔ 51 فیصد لوگوں نے پی ٹی آئی کا انتخاب کیا جبکہ مسلم لیگ (ن) 8 فیصد کیساتھ دوسرے نمبر پرہے۔اس کے بعد جے یوآئی (ف)6، عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) 4، پی پی پی 4 اور جماعت اسلامی ایک فیصد ووٹ کیساتھ عوامی مقبولیت کی فہرست میں شامل ہیں۔ صوبہ سندھ میں عوامی مقبولیت میں پاکستان پیپلزپارٹی 27 فیصد کیساتھ سب سے آگے ہے۔دوسرے نمبر پاکستان تحریک انصاف ہے جبکہ تیسرے نمبر پر پاکستان مسلم لیگ (ن) ہے۔ جماعت اسلامی 2 فیصد، تحریک لبیک 2 فیصد، ایم کیوایم پاکستان ایک فیصد اور جے یوآئی (ف) ایک فیصد مقبولیت کی حامل پائی گئیں۔ صوبہ بلوچستان میں عوام نے بلو چستا ن عوامی پارٹی (بی اے پی)کو 10 فیصد ووٹ کیساتھ مقبولیت کی دوڑ میں اول پوزیشن دی ہے۔ دوسرے نمبر پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان پیپلزپارٹی ہیں جن کی مقبولیت 9 فیصد پائی گئی۔ جمعیت علماء اسلام (ف) کو 7، مسلم لیگ (ن) کو 4، بی این پی، پختونخوا ملی عو ا می پارٹی، نیشنل پارٹی کو 2، 2 فیصد اور عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کو ایک فیصد ووٹ ملے۔

پارٹی گڑھ

مزید :

صفحہ اول -