ای کامرس کے شعبہ کی ترقی کیلئے اصلاحات ناگزیر

ای کامرس کے شعبہ کی ترقی کیلئے اصلاحات ناگزیر

  

اسلام آباد(اے پی پی) ای کامرس کے شعبہ کی ترقی کیلئے اصلاحات ناگزیر ہیں، انٹرنیٹ سے استفادہ کی شرح میں کمی پاکستان کی شرح نمو میں رکاوٹ ہے۔ عالمی بینک کے سینئر اکانومسٹ کنزالو والیرا نے کہا ہے کہ پاکستان میں انٹرنیٹ سے استفادہ کی کم شرح سے ملکی ترقی متاثر ہو رہی ہے جس کی وجہ سے ای کامرس کے شعبہ کی استعداد سے حقیقی فائدہ حاصل نہیں ہو رہا۔ انہوں نے کہا کہ عالمی بینک ای کامرس کے شعبہ کی ترقی کیلئے اصلاحات میں پاکستان کی معاونت کیلئے پرعزم ہے۔ پالیسی ادارہ برائے پائیدار ترقی (ایس ڈی پی آئی) کے جوائنٹ ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر وقار احمد نے کہا ہے کہ سال 2019ء کے دوران پاکستان میں ای کامرس کے شعبہ کی شرح نمو 90 فیصد رہی ہے تاہم خطہ کے دیگر ممالک کے مقابلہ میں پاکستان میں ای کامرس کی سیلز کا حجم اب بھی کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ۔19 کی وباء کی وجہ سے ای کامرس کے اداروں کو ترقی کا ایک موقع ملا ہے تاہم حکومت کی جانب سے ای کامرس کے شعبہ کی پالیسی سے شعبہ کی کارکردگی میں مزید اضافہ کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ای کامرس کے شعبہ کی استعداد سے استفادہ کیلئے ضروری ہے کہ ٹیکسز کا یکساں نظام متعارف کرایا جائے کیونکہ مختلف صوبوں میں یہ شرح مختلف ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ای کامرس کی جامع پالیسی کے تحت شعبہ پر صارفین کے اعتماد میں اضافہ کے ذریعے اس کی کارکردگی بڑھائی جا سکتی ہے جبکہ ٹیکسز کے یکساں نظام سے بھی مثبت نتائج حاصل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ای کامرس پالیسی کے تحت کاروباری اداروں کی جانب سے معیاری مصنوعات اور خدمات کی فراہمی کو بھی یقینی بنایا جا سکتا ہے۔

مزید :

کامرس -