پاک افغان باڈر کی بندش مزدور دشمن پالیسی، کاروبار، تباہ، لوگ فاقہ کشی کا شکار: سراج الحق

پاک افغان باڈر کی بندش مزدور دشمن پالیسی، کاروبار، تباہ، لوگ فاقہ کشی کا ...

  

کو ئٹہ (آئی این پی)امیر جماعت اسلامی سنیٹرسراج الحق نے کہاکہ پاک افغان بارڈر کی بندش مزدور دشمن،دوستوں کیساتھ دشمنی قراردیتے ہوئے ایک مہینے سے احتجاج پر بیٹھے ہوئے مظاہرین کو مبارک باد دی اور ہر قسم کی تعاون کایقین دلایا اس اہم مسئلے کے حل کیلئے انشاء اللہ جماعت اسلامی پارلیمنٹ میں بھر پور آوازاُٹھائیگی۔پاک افغان دوستی سے ہی علاقہ ترقی کرے گا،دشمن کی سازشیں ناکام ہوگی بارڈربندش سے بہت سے قبائلی،سرحد پر رہنے والوں کی کاروبار تباہ ہوکر یہ لوگ فاقہ کشی کا شکار ہیں۔سرحدپر رہنے والے دونوں ممالک کے عوام ایک دوسرے کی مفادات کا خیال رکھتے ہوئے پرامن رہتے ہوئے احتجاج جاری رکھیں۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مولانا عبدالحق ہاشمی سے فون پر گفتگوکرتے ہوئے کیا صوبائی امیر مولانا عبدالحق ہاشمی نے چمن باب دوستی کی بندش،ایک مہینے سے احتجاج سمیت دیگر مسائل وپریشانی اور پریشانی سے سنیٹرسراج الحق کو آگاہ کرتے ہوئے بتایاکہ بہت سے مجبور وپریشان پاکستانی افغانستان میں اور افغانی پاکستان میں پھنسے ہوئے ہیں۔پاک افغان ٹریڈ میں مشکلات،بارڈربندش کی وجہ سے سرحدی عوام کیساتھ تاجر سمیت ہر طبقہ متاثراور پریشانی کا شکار ہیں باب دوستی بندش کی وجہ سے تاجر وعوام کسمپرسی کی زندگی گزارنے پر مجبور،بے روزگاری میں بدترین اضافہ اور مریضوں وں ضعیف افراد بہت پریشانی کا شکارہیں۔حکومت نے باب دوستی سے کوئٹہ تک جگہ جگہ چیک پوسٹیں بنائی ہیں جس پر تلاشی کے بہانے روز شریف شہریوں وسادہ لوح عوام کی تذلیل کی جاتی ہے جس کے خلاف قبائلی عوام،سیاسی پارٹیوں نے آوازاُٹھائی ان چیک پوسٹوں کو فوری طور پرختم کیا جائے۔

مزدور دشمن

لاہور(نمائندہ خصوصی)جمعیت علماء پاکستان کے وفد نے علامہ قاری محمد زوار بہادر کی قیادت میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق سے منصورہ میں ملاقات کی وفد میں حافظ نصیر احمد نورانی، رشید احمد رضوی،مفتی تصدق حسین اور مفتی جمیل رضوی بھی شامل تھے۔جمعیت کے وفد نے جماعت اسلامی کے سابق امیرسید منورحسن کے انتقال پر سراج الحق اور جماعت اسلامی کے دیگرقائدین سے اظہار تعزیت کیااور منور حسن کی جماعت اسلامی کے لئے خدمات اور ملک میں اسلامی جماعتوں میں ہم آہنگی کیلئے ان کے کردار کو خراج تحسین پیش کیا اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے ملکی اور مقبوضہ کشمیر کی صورت حال پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں بدترین ظلم جاری ہے 3 سالہ ننھے عباد کے سامنے اس کے نانا کا فوج کے ہاتھوں قتل پوری دنیا کے لئے لمحہ فکریہ ہے اقوام عالم کے نام نہاد انسانی حقوق کے علمبردار مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں، بوڑھوں، خواتین اور بچوں کے قتل عام پر آنکھیں بند کیے ہوئے ہیں پاکستانی قوم اپنے کشمیری بہن بھائیوں کے قتل عام پر مزید خاموش نہیں رہ سکتے۔مقبوضہ وادی میں گزشتہ 11 ماہ سے بھارتی افواج ظلم کی نئی تاریخ رقم کررہی ہے۔مقبوضہ وادی کے عوام بھوک اور ادویات کی کمی کا شکار ہو کر موت کی وادی میں جارہے ہیں۔ عالم اسلام بھی ان مظلوم مسلمانوں کے لیے کچھ نہیں کرسکا۔ جو اسلامی ممالک کے لیے باعث شرم ہے۔ قائدین نے کہا کہ لداخ میں چینی افواج کے ہاتھوں بدترین ذلت اُٹھانے کے بعد مودی حکومت پاکستان پر حملے کی تیاری کررہی ہے۔اگر بھارت نے ایسی غلطی کی تو مسلح افواج اور پاکستانی قوم مل کربھارت کو تاریخ کا بدترین سبق سکھائیں گے۔جس سے اس کی نسلیں یاد رکھیں گی۔دونوں جماعتوں کے قائدین سراج الحق اور علامہ قاری زوار بہادر نے اسلام آباد میں مندر کی تعمیر کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم کااسلام آباد میں مندر کی تعمیر کو فوراً روک دیں ورنہ اس کی تمام تر نتائج کے ذمہ دار حکمران ہونگے۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -