اللہ کی یاد کو اجتماعی طور پر اپنانے کی ضرورت ہے،عبدالقدیر اعوان

اللہ کی یاد کو اجتماعی طور پر اپنانے کی ضرورت ہے،عبدالقدیر اعوان

  

پشاور (سٹی رپورٹر) تنظیم الاخوان پاکستان نے کہا ہے کہ ااسم اعظم سے یہ نہیں ہوتا کہ بندہ جو چاہے ویسا ہوجائے بلکہ اسم اعظم سے بندہ اللہ کریم کی رضا پر راضی رہتا ہے اوراُسے وہی پسند آئے گا جو اللہ کریم اس کے لیے پسند فرمائیں گے۔ان خیالات کااظہار امیر عبدالقدیر اعوان نے 15 روزہ سالانہ تربیتی پروگرام کے اختتامی بیان اور جمعتہ المبارک کے موقع پرخطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مسلمان ریاست میں ہم اس قدر کمزور ہو چکے ہیں کہ حضرت صدیق اکبرؓ اور خانوادہ رسول ﷺ جیسی ہستیوں کی شان میں گستاخی کی جارہی ہے پھر بھی ہماری غیرت ایمانی نہ جاگ رہی ہیں تو سمجھ لیں کہ ہم اجتماعی طور پر غفلت میں پڑے ہیں کیونکہ جب اللہ کریم کی یاد سے بندہ غافل ہوتا ہے تو پھر یہی صورت حال پیدا ہوتی ہے جو اس وقت ہمارے معاشرے میں ہے جبکہ ہمیں اللہ کی یاد کو اجتماعی طور پر اپنانے کی ضرورت ہے اور صرف ذکر الہی،یاد الہی ہمیں بحیثیت قوم اس غفلت سے نکال سکتی ہے انہوں نے کہا کہ ذکر پاس انفاس کا حکم براہ راست قرآن کریم میں موجود ہے اور اس کا طریقہ بھی بتا دیا ہے اب ہم اگر اسے اختیار نہ کریں تو یہ ہماری کمزوری ہے یہی واحد طریقہ ہے جو بندہ مومن کو اندر سے تبدیل کر کے رکھ دیتا ہے بندہ کو گناہ کڑوا لگتا ہے اور نیکی پر چلنا اس کے لیے آسان ہو جاتا ہے۔آخر میں انہوں نے ملکی سلامتی اور کورونا سے حفاظت کی اجتماعی دعا بھی فرمائی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -