"کچھ اور ججز کو کٹھ پتلیوں کے ذریعے بلیک میل کیا جاتا رہا اور۔۔۔" ارشد ملک کی برطرفی پر حکومتی موقف بھی آگیا

"کچھ اور ججز کو کٹھ پتلیوں کے ذریعے بلیک میل کیا جاتا رہا اور۔۔۔" ارشد ملک کی ...

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا ہے کہ جج ارشد ملک کی ملازمت سے برطرفی ایک عہد کا ڈراپ سین ہے۔شبلی فراز نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری بیان میں کہا کہ اس عہد میں کچھ اور ججز کو کٹھ پتلیوں کے ذریعے بلیک میل کیا جاتا رہا۔ان کا کہنا تھا کہ ملک میں بلیک میلنگ، کرپشن اور مافیا کو فروغ دیا گیا۔ مسلم لیگ ن کی قیادت کو اس مائنڈ سیٹ کو فروغ دینے پر قوم سے معافی مانگنی چاہیے۔

ادھر معاون خصوصی شہباز گل نے اپنے ٹویٹ میں لکھا ہے کہ جج ارشد ملک کیس میں دو فریق تھے، ایک ارشد ملک جنہیں آج سزا ملی اور دوسرے مریم نواز ناصر بٹ۔ آج کہ فیصلے کہ بعد اس بات کی امید اور بھی مضبوط ہو گئی کہ مریم اور ناصر بٹ کو بھی سزا مل سکتی ہے اور ان کا اصل چہرہ عوام کہ سامنے ہوگا۔ سزا دینے یا نہ دینے کا فیصلہ تو اعلیٰ عدلیہ ہی کریگی۔

جبکہ معاون خصوصی شہزاد اکبر نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ جج ارشد ملک بلیک میل کیس کے دو کردار میں سے ایک ارشد ملک خود برطرف ہوگئے۔ اس کھیل کا دوسرا کردار مریم صفدر جس نے جج کی نازیبا وڈیو استعمال کرکے اپیل پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی، ابھی سزا ہونا باقی ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -