نوجوان ہاتھ ملتے رہ گئے، ایک سال سے خالی آسامیاں ہی ختم کرنے کا فیصلہ

نوجوان ہاتھ ملتے رہ گئے، ایک سال سے خالی آسامیاں ہی ختم کرنے کا فیصلہ
نوجوان ہاتھ ملتے رہ گئے، ایک سال سے خالی آسامیاں ہی ختم کرنے کا فیصلہ

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وفاقی حکومت نے سرکاری ملازمتیں کم کرنے کا فیصلہ کیا ہے, اس ضمن میں اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو باقاعدہ مراسلہ بھیج دیا گیا ہے۔

ہم نیوز کے ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے فیصلہ کیا گیا ہے کہ گریڈ ایک سے لے کر 16 تک کی ایسی تمام آسامیاں ختم کردی جائیں جو گزشتہ ایک سال سے خالی ہیں,وفاقی کابینہ کی عمل درآمد کمیٹی کی سفارشات پر وزارت خزانہ نے مراسلہ اسٹیبلیشمنٹ ڈویڑن کو بھیج دیا ہے۔وفاقی سیکریٹری خزانہ کی منظوری کے بعد اس سلسلے میں باقاعدہ مراسلہ اسٹیبلیشمنٹ ڈویژن کو بھیجا گیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ طریقہ کار کے تحت اسٹیبلشمنٹ ڈویژن وفاقی کابینہ سے منظوری لینے کے بعد اس سلسلے میں مزید کارروائی کرے گا۔ذرائع کے مطابق اگر اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے اس ضمن میں وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد مزید کارروائی کی تو سرکاری ملازمتیں کم ہو جائیں گی۔

وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے اکتوبر 2019 میں کہا تھا کہ حکومت 400 محکمے ختم کررہی ہے۔ انہوں نے واضح کیا تھا کہ نوکریاں دیں گے تو معیشت بیٹھ جائے گی۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ’ٹوئٹر‘ پرجاری کردہ اپنے ایک پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ حیران ہوں ہر بیان کو کیسے سیاق و سباق کے بغیر سرخی بنا دیا جاتا ہے۔

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا تھا کہ میں نے کہا تھا کہ نوکریاں حکومت نہیں پرائیوٹ سیکٹر دیتا ہے اورحکومت نے ماحول بنانا ہے۔وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں حکومتیں چھوٹی ہوتی جارہی ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -