لداخ پہنچتے ہیں بھارتی وزیر اعظم نے' ہاتھ جوڑ 'لیے

لداخ پہنچتے ہیں بھارتی وزیر اعظم نے' ہاتھ جوڑ 'لیے
لداخ پہنچتے ہیں بھارتی وزیر اعظم نے' ہاتھ جوڑ 'لیے

  

لداخ(ڈیلی پاکستان آن لائن) چین اور بھارت کے درمیان ہمالیہ ریجن میں لداخ کے علاقوں میں سرحدی کشیدگی کے بعد بھارتی وزیر اعظم نے دباو بڑھنے کے بعد لداخ کا دورہ کیا ہے۔

پاکستان مخالف بیانات کے دوران آستینیں چڑھانے والے مودی لداخ چلے تو گئے مگر چینی فوجیوں کے ہاتھوں بھارتی اہلکاروں کی چھترول کے باوجود کوئی سخت بیان تک نہ دیا۔ الٹا ہاتھ جوڑے دریاوں میں پھول بہاتے ہوئے امن و شانتی کی منتیں مانتے نظر آئے۔

سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹویٹر پر پوسٹ کی گئی ان کی تصاویر بھی وائرل ہو رہی ہیں جن میں وہ لداخ کے پہاڑوں کے سامنے ہاتھ جوڑے کھڑے ہیں۔

اپنے ٹویٹ میں انہوں نے کہا نمو میں گزشتہ روز انہوں نے سندھو پوجا کی اور ملک و قوم کے لیے امن و سلامتی کی دعائیں کیں۔

خیال رہے چین اور بھارت کے درمیان سرحد پر شدید کشیدگی چل رہی ہے، 15جون کو چینی فوجیوں نے بنا کسی ہتھیار کے بھارت کے کرنل سمیت 20 جوانوں کو قتل جب کہ متعدد کو زخمی کردیا تھا۔ دونوں ملک کشیدگی کی ذمہ داری ایک دوسرے پر ڈال رہے ہیں۔ تاہم لمبی لمبی چھوڑنے والے مودی اس بار دھیمے دھیمے نظر آرہے ہیں اور اتنے بڑے جانی نقصان کے باوجود مناسب اقدامات نہ کرنے پر انہیں اپوزیشن کی جانب سے شدید تنقید کا بھی سامنا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -