اے این پی باپ کے ”پاپ“ میں حصہ دار نہ بنے،بلوچستان اپوزیشن

 اے این پی باپ کے ”پاپ“ میں حصہ دار نہ بنے،بلوچستان اپوزیشن

  

کوئٹہ (آن لائن) بلوچستان اسمبلی میں متحدہ اپوزیشن نے کہا ہے کہ سو سالہ جدوجہد کی تاریخ رکھنے والی جمہوریت کی علمبردار عوامی نیشنل پارٹی کو باپ کے پاپ میں فریق یا حصہ دار نہیں بننا چاہیے، حکومت کی جانب سے آیف آئی آر اخباری بیانات تک ختم ہوا ہے،آزادی صحافت پر آمریت میں بھی اس طرح کی قدغن نہیں لگائی گئی ہے جس طرح نام نہاد جمہوری حکومت میں آج میڈیا پر قدغنیں لگائی گئی ہے،اپوزیشن کے 17 ارکان کو شدید خطرات ہیں۔ حکومت نے پی ایس ڈی پی میں کرمنلز کیلئے قانونی طریقے سے فنڈز رکھے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار متحدہ اپوزیشن کے ارکان قائد حزب اختلاف ملک سکندر خان ایڈووکیٹ، ملک نصیر احمد شاہوانی، ثنا بلوچ نے حاجی نواز خان کاکڑ، اصغر علی ترین، میر ذابد ریکی، میر یونس عزیز زہری، شکیلہ نوید دہوار و دیگر کے ہمراہ پولیس تھانہ بجلی روڈ کے باہر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ حکومتی وزرا ء کی آج ہونیوالی پریس کانفرنس شرمناک اور حقائق کیخلاف تھی۔

بلوچستان اپوزیشن 

مزید :

صفحہ آخر -