نوشہرہ کے علماء نے وقف املاک بل اور اعزازیہ مسترد کردیا

نوشہرہ کے علماء نے وقف املاک بل اور اعزازیہ مسترد کردیا

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ) نوشہرہ کے علماء نے وقف املاک بل اور اعزازیہ مسترد کردیا. وفاق المدارس کے علاوہ کوئی دوسرا بورڈ قبول نہیں. تفصیلات کے مطابق جمعیت علماء اسلام ضلع نوشہرہ کے زیراہتمام ضلع نوشہرہ کے تمام دینی مدارس کے مہتممین اور مدرسین حضرات کا بھرپور اجلاس جامعہ ترتیل القرآن نوشہرہ میں منعقد ہوا. اجلاس سے مہمان خصوصی عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے صوبائی امیر حضرت مولانا مفتی شہاب الدین پوپلزئی نے پرمغز خطاب کیا. اجلاس کی صدارت جمعیت علماء اسلام ضلع نوشہرہ کے امیر قاری محمداسلم حقانی نے کی جبکہ ضلعی جنرل سیکرٹری مفتی حاکم علی حقانی نے بھی خطاب کیا. مفتی شہاب الدین پوپلزئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وفاق المدارس العربیہ کے خلاف ہر دور میں سازشیں ہوئی. اور ہر دور میں جمعیت علماء اسلام نے ان سازشوں کو ناکام بنایا. موجودہ حکومت نے آتے ہی اسلام کے خلاف سازشوں کا آغاز کیا. اور شروع ہی سے جمعیت علماء اسلام سیسہ پلائی ہوئی دیوار بن کر مقابلہ کررہی ہے. وقف املاک بل کو چور دروازے سے منظور کیا گیا. لیکن وہ نادان ہمارے اکابر کی تاریخ اور ہمارے قائد حضرت مولانا فضل الرحمن مدظلہ کی تاریخ بھول گئے. جنہوں نے اسلام اور دینی مدارس کے خلاف پاس کئے گئے بلوں کو بھی حکمرانوں کے منہ پر مارتے ہوئے ناکام بنایا. انہوں نے کہا کہ وفاق المدارس العربیہ علماء دیوبند کا نمائندہ بورڈ ہے. اسکے علاوہ ہر بورڈ نامنظور ہے. اسے ہم اتفاق سے مسترد کرتے ہیں. انہوں نے کہا کہ ہمارے علماء کو خریدنے کی ناکام کوشش بھی کی جارہی ہے اور ایک بار پھر اعزازیہ کا ڈھونگ رچایا جارہا ہے. اس موقع پر اجلاس میں شریک ضلع بھر کے سینکڑوں علماء نے بالاتفاق حکومتی اعزازیہ کو مسترد کردیا اور وفاق المدارس العربیہ پر مکمل اعتماد اور باقی تمام خودساختہ بورڈز کو مسترد کردیا.

مزید :

پشاورصفحہ آخر -