پنجاب کے وزیر خزانہ کا مذہب،شہریت سوالیہ نشان بن گئی،تحریک استحقاق داخل

پنجاب کے وزیر خزانہ کا مذہب،شہریت سوالیہ نشان بن گئی،تحریک استحقاق داخل
پنجاب کے وزیر خزانہ کا مذہب،شہریت سوالیہ نشان بن گئی،تحریک استحقاق داخل

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)مسلم لیگ( ق) کی ایم پی اے ثمینہ خاور حیات نے پنجاب کے وزیر خرانہ رانا آصف محمود کی دوہری شہریت اور ان کے مذہب کے حوالے سے ابہام کے بارے میں تحریک استحقاق اسمبلی میں جمع کروا دی ہے۔تحریک استحقاق میں کہاگیا ہے کہ رانا آصف کینیڈا کی شہریت بھی رکھتے ہیںجو اقلیتی نشست پر پنجاب اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے ہیں جبکہ وہ غیر مسلم نہیں اس طرح انہوں نے آئین کے آرٹیکل اکیاون چھ سی کی خلاف ورزی کی ہے جس کے مطابق اقلیتی نشستیں صرف غیر مسلم پاکستانیوں کے لیے مخصوص ہیں۔ تحریک میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ اس معاملے کی تحقیقات کروائی جائیں اور وزیر خزانہ کے خلاف آئین اور قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے۔ دریںاثناءتحریک انصاف کے رہنماءانعام اللہ نیازی نے بھی رانا آصف محمود کی پاکستان اور کینیڈا کی شہریت کا معاملہ اٹھایا ہے اور انہوں نے بتایا کہ نادرا کے ریکارڈ کے مطابق رانا آصف کا مذہب اسلام ہے اور وہ حیران کن طور پر اقلیتی نشست پر رکن اسمبلی منتخب ہوئے ہیں۔ رانا آصف محمود کی مذہب کی تبدیلی کے حوالے سے کیس پہلے ہی زیرسماعت ہے جس کی سماعت 9 جون کو ہو گی۔اوراسی دن وزیر خزانہ کی حیثیت سے وہ بجٹ پیش کریں گے۔ انعام اللہ نیازی کا کہنا تھا کہ وہ جلد ہی علمائے دین سے رابطہ کر کے اس بارے باقاعدہ فتویٰ لیں گے اور عدلیہ سے بھی حکم امتناعی کے لیے رجوع کریں گے۔

مزید : سیاست /اہم خبریں