سینٹرل کنٹریکٹ کا معاملہ ، ٹیم آفیشلز سرجوڑ کر بیٹھ گئے

سینٹرل کنٹریکٹ کا معاملہ ، ٹیم آفیشلز سرجوڑ کر بیٹھ گئے

کراچی(آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی کرکٹرز کے نئے سینٹرل کنٹریکٹ کو کھلاڑیوں کی فٹنس سے مشروط کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور سینٹرل کنٹریکٹ حاصل کرنے کے بعد جو کھلاڑی فٹنس کا مطلوبہ معیار حاصل نہیں کر سکے گا۔اسے جرمانے کا سامنا کرنا پڑے گا۔باخبر ذرائع کے مطابق پاکستانی سلیکٹرز ان دنوں لاہور میں معین خان کی سربراہی میں سر جوڑ کر بیٹھے ہیں اور سینٹرل کنٹریکٹ کے لئے25ناموں کو حتمی شکل دے رہے ہیں اور اس دوران کوچ وقار یونس سے بھی ٹیلی فون پر مشاورت کی گئی ہے۔

تاہم یہ بات اصولی طور پر طے ہوچکی ہے کہ ان کھلاڑیوں کو سینٹرل کنٹریکٹ ملے گاجنہوں نے گذشتہ سیزن کے دوران کارکردگی دکھائی ہوگی۔تاہم سینٹرل کنٹریکٹ کے لئے پہلی شرط فٹنس ہے۔اگر کسی کھلاڑی کو مشروط طور پر سینٹرل کنٹریکٹ دے دیا جاتا ہے اور اور اس کھلاڑی کو کہا جاتا ہے کہ وہ اس عرصے میں اپنی فٹنس کو بہتر بنائیں اور اگر وہ فٹنس کو بہتر بنانے میں ناکام رہے۔تو انہیں جرمانے کا سامنا کرنا پڑے گا۔سینٹرل کنٹریکٹ میں خراب فٹنس والے کھلاڑیوں کے لئے جرمانے کی شق کو شامل کیا جائے گا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی