عدالت کی دہلیز پر حاملہ خاتون کے قتل پرسی سی پی او لاہور طلب

عدالت کی دہلیز پر حاملہ خاتون کے قتل پرسی سی پی او لاہور طلب

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس مسٹر جسٹس عمر عطاءبندیال اور مسٹر جسٹس منظور احمد ملک پر مشتمل خصوصی ڈویژن بنچ نے قرار دیا ہے کہ یہ بات سمجھ سے بالا ہے کہ فرزانہ بی بی قتل جیسے واقعات کے وقت پولیس اہلکار لاتعلق کیوں ہو جاتے ہیں۔ فاضل بنچ نے سی سی پی او لاہور کوعدالت عالیہ کی دہلیز پر قتل ہونے والی حاملہ خاتون فرزانہ کے مقدمہ کی تفتیشی رپورٹ سمیت 5جون کو طلب کر لیا۔گزشتہ روز اس خصوصی بنچ نے عدالتوں کی سکیورٹی سے متعلق درخواستوں کی سماعت کی، سماعت کے دوران وکلا نے بتایا کہ پولیس کی عدالتوں میں فول پروف سکیورٹی فراہم کرنے کا دعویٰ غلط ثابت ہوا، چند روزقبل ہائی کورٹ کے مسجد گیٹ کے قریب حاملہ خاتون فرزانہ بی بی کو اینٹیں مار مارکر قتل کر دیا گیا مگر موقع پر موجود پولیس اہلکار بے حس کھڑے تماشا دیکھتے رہے، قائم مقام پراسکیوٹر جنرل اسجد گرال نے بنچ کو بتایا کہ جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم فرزانہ قتل کیس کی تحقیقات کر رہی ہے جس میں 10 ملزموں کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور مقدمہ چالان بھی 7دن میں ٹرائل کورٹ میں جمع کروا دیا جائیگا۔

فرزانہ قتل

مزید : صفحہ آخر