غریب خاتون کا بچے فروخت کرنے کا اعلان

غریب خاتون کا بچے فروخت کرنے کا اعلان
غریب خاتون کا بچے فروخت کرنے کا اعلان

  


فیصل آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) کھرڑیانوالہ کی رہائشی خاتون نے غربت بھوک، معاشی تنگدستی، شوہر کی بیماری سے تنگ آکر حکمرانوں اور عوامی نمائندوں کی بے حسی کے باعث اپنے خاوند کاعلاج و معالجہ کرنے کیلئے اپنے 4 جگر کے ٹکڑوں کو فروخت کرنے کا اعلان کردیا۔ مجبور خاتون کا کہنا ہے کہ میں عرصہ 5 سال سے اپنے خاوند کی بیماری، غربت اور بھوک افلاس سے جنگ لڑرہی ہوں۔ اگر حکومت اور عوامی نمائندوں نے میری مدد نہ کی تو میں اپنی دو بیٹیاں اور دو بیٹے فروخت کردوں گی۔ یہ بات کھرڑیانوالہ چک نمبر 266 نزد دربار ٹانڈے سائیں کی رہائشی غریب خاتون خالدہ بی بی نے بتائی۔ اس نے بتایا کہ میرا خاوند یاسین برنالہ میں چوہدری یاسین کی کوٹھی میں چوکیدارا کرتا تھا اور برنالہ ہی کے دو گروپوں چوہدری انور اور اسلم جھرا کے درمیان عرصہ 17 سال سے تقریباً ڈیڑھ ایکڑ زمین کا تنازع چل رہا تھا کہ عرصہ پانچ سال قبل اسلم جھرا گروپ نے چوہدری انور کے گھر پر فائرنگ کردی اور کارتوس میرے خاوند یاسین کی ریڑھ کی ہڈی میں لگا جس سے اس کا نچلا دھڑ مفلوج ہوگیا۔ گھر میں جمع پونجی سے خاوند کا علاج کراچکی ہوں مگر کوئی افاقہ نہین ہورہا اور وہ بستر مرگ پر پڑا ایڑیاں رگڑ رہا ہے۔ چلنے پھرنے سے بھی قاصر ہے اور موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا ہے یہاں تک کہ کپڑے بھی نہیں پ ین سکتا اور پاخانہ کیلئے اس کو نالیاں لگی ہوئی ہیں میں محنت مزدوری اور مانگ تانگ کر گزر اوقات کررہی ہوں مگر اب میرے اعصاب جواب دے گئے ہیں گھر میں غربت، بھوک و افلاس اور بیماری نے ڈیرے ڈال لئے ہی ں۔ بچے بھوک سے بلکتے اور روتے نہیں دیکھتے جاتے۔ میرے دو بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں اور میں تنگ آکر چاروں بچوں کو فروخت کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں غریب خاتون نے بتایا کہ دونوں گروپوں کے درمیان اب صلح ہوگئی ہے۔ مگر چوہدری انور گروپ نے بھی ہماری کوئی مدد نہیں کی۔ میں کوڑی کوڑی کی محتاج ہوگئی ہوں۔ اس امر پر غریب بے آسرا خاتون خالدہ بی بی نے وزیراعظم، وزیراعلیٰ پنجاب، صوبائی وزیر قانون، حلقہ ارکان اسمبلی، کمشنر اور ڈی سی او فیصل آباد مخیر حضرات سے اپیل کی ہے کہ میرے خاوند کا سرکاری سطح پر علاج و معالجہ اور میری مالی طور پر مدد کی جائے۔

مزید : فیصل آباد


loading...