الطاف حسین کے معاملے میں پاکستانی ہائی کمیشن کے اختیارات نہایت محدود

الطاف حسین کے معاملے میں پاکستانی ہائی کمیشن کے اختیارات نہایت محدود
الطاف حسین کے معاملے میں پاکستانی ہائی کمیشن کے اختیارات نہایت محدود

  


لندن (مرزا نعیم الرحمان سے ) پاکستانی ہائی کمیشن کی طرف سے فارن اینڈ کامن ویلتھ سروس کو ایک باضابطہ طور پر الطاف حسین سے ملاقات کیلئے متعلقہ اداروں سے رابطہ کرلیاہے تاہم پاکستانی ہائی کمیشن کے اختیارات نہایت محدود ہیں ۔ طریقہ کار کے مطابق پولیس اور دیگر تحقیقاتی ادارے متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطاف حسین سے یہ پوچھیں گے کہ کیا وہ پاکستانی ہائی کمیشن کے عملے سے ملنا پسند کریں گے، اگر انہوں نے انکار کر دیا تو یہ درخواست مسترد کی جا سکتی ہے اور اگر انہوں نے رضا مندی کا اظہار کیا تو پاکستانی سفارتی عملہ کے اختیارات جو اس کیس میں انتہائی محدود ہیں میں صرف ملاقات کے دوران اس امر کو یقینی بنائیں گے کہ کیا الطاف حسین جسمانی طور پر فٹ ہیں انہیں وکیل کی سہولت میسر ہے انہیں دوائی وغیرہ وقت پر مل رہی ہے اور انہیں سونے کے لیے بستر دیا گیا ہے کہ نہیں ان پر کوئی تشدد تو نہیں ہو رہا ؟اس موقع پر میٹرو پولیٹن پولیس کا وکیل موجود ہو گا اور کسی بھی شکایت کی صورت میں اس فوری طور پر رفع دفع کیا جائے گا ۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق سکاٹ لینڈ یارڈ نے درخواست منظور کرتے ہوئے الطاف حسین سے ملاقات کے لیے تین افراد کے نام مانگ لیے ہیں جو اُن کی گرفتاری کے بعد وکلاءکے علاوہ کسی بھی شخص کی پہلی ملاقات ہوگی ۔

مزید : قومی