ویران حوض 800 بچوں کی قبر بن گیا

ویران حوض 800 بچوں کی قبر بن گیا
ویران حوض 800 بچوں کی قبر بن گیا

  


ڈبلن (نیوز ڈیسک) آئرلینڈ میں کئی دہائیوں پرانے ایک ویران حوض میں 800 بچوں کی اجتماعی قبر دریافت ہوئی ہے جس میں خفیہ طور پر دبائے گئے بچوں کے ڈھانچے اور کھوپڑیاں ملی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق کاﺅنٹی گیلوے نامی علاقے میں 1925ءسے 1961ءتک بے سہارا ماﺅں کیلئے ایک خصوصی دارالامان قائم کیا گیا تھا۔ اس دارالامان میں مقیم خواتین اور ان کے بچوں کے متعلق خیال کیا جاتا ہے کہ وہ بدترین حالات سے دوچار تھے اور یہ یہاں مقیم بچے صحت اور غذا کی مناسب سہولیات سے محروم تھے۔ تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ بیماری اور غیر مناسب دیکھ بھال کی وجہ سے بچوں کی بڑی مقدار میں ہلاکتیں ہوئیں اور ان بچوں کو خفیہ طور پر بغیر کسی کتبے اور بغیر کسی تابوت کے پانی کی صفائی کرنے والے ایک بڑے حوض میں پھینکا جاتا رہا۔ یہ حوض مدتوں سے ویران ہے اور اس خوفناک دریافت نے ہر سننے والے پر دہشت طاری کردی ہے۔

مزید : انسانی حقوق