کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ میں غریب مریضوں کامفت علاج

کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ میں غریب مریضوں کامفت علاج
کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ میں غریب مریضوں کامفت علاج

  

شہباز شریف نے پنجاب حکومت کی آئینی مدت کا آخری دن بھی عوامی خدمت کرتے ہوئے انتہائی مصروف ترین گزارا۔ انہوں نے ارکان اسمبلی سے ملاقات کے بعد وزیراعلیٰ نے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کامونکی کا دورہ کیا اور ہسپتال کے دورے کے دوران مریضوں کی عیادت کی۔ لاہورمیں پاکستان کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ ہم نے پنجاب کے ہسپتالوں کی حالت بہتر کی ہے۔

صوبے میں اس وقت 70ڈاکٹر یورپ اور مشرق وسطیٰ سے آئے ہیں۔ کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ 20 ارب روپے کا منصوبہ ہے اور یہاں اب تک دو مریضوں کا مفت ٹرانسپلانٹ کیا گیا ہے۔

کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ میں غریب مریضوں کا مکمل علاج مفت ہورہا ہے، جبکہ صحت کے شعبے میں مزید کام ہو رہے ہیں۔ یہاں نرسنگ سکول، ریسرچ سینٹر بھی بنائے جا رہے ہیں۔

مَیں نے علاج امریکہ کے ہسپتال سے کرایا ،جس پر 60ہزار ڈالر خرچ ہوئے۔ خدشہ ہے کہ نیب کہیں یہ نہ پوچھ لے کہ یہ رقم کہاں سے آئی،جبکہ اس ادارے میں دونوں مریضوں کے گردوں کا ٹرانسپلانٹ سو فیصد مفت ہوا ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ پنجاب بھر کے ضلعی و تحصیل ہسپتالوں کی تعمیر نو اور نئے شعبہ جات کے قیام کے لئے حکومت پنجاب نے گذشتہ تین برسوں میں شعبہ صحت میں انقلاب برپا کر دیا ہے۔ پنجاب کے 100 تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتالوں میں ایک مربوط پروگرام کے تحت انہیں سٹیٹ آف دی آرٹ صحت عامہ کی سہولتوں کے ساتھ ساتھ امسال 6 ارب ر وپے کی اعلیٰ معیار کی ادویات فراہم کی گئیں اور 100 میں سے پہلے فیز میں 15 ہسپتالوں کا چناؤکیاگیا، جن میں سے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کامونکی بھی شامل ہے۔

باقی 85ہسپتالوں میں اللہ تعالیٰ نے 2018ء کے الیکشن میں موقع دیا تو اگلے مینڈیٹ میں پہلے سال میں ہی 100 تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتالوں میں نئے شعبے قائم کر دیئے جائیں گے۔ انہوں نے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کامونکی میں 8کروڑ 70 لاکھ روپے کی لاگت سے تجدید نو اور تزئین و آرائش کے کام کاتفصیلی جائزہ لینے کے بعد کہاکہ آج ضلعی و تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتالوں میں سٹیٹ آف دی آرٹ صحت عامہ کی مفت سہولتوں کی فراہمی جن میں رینو و یشن، وارڈز اپ گریڈیشن، ہسپتالوں میں جدید مشینری، بہترین کمبلز، بیڈز، نر سوں اور ڈاکٹر وں کی تعداد میں اضافہ کی بدولت انقلابی تبدیلیاں لائی گئیں۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ جس نے بددیانتی یا کرپشن کی اس کا احتساب ہونا چاہئے تاہم ایمانداری سے کام کرنے والوں کی ستائش بھی ہونی چاہئے۔ اگر ایسا نہ ہوا تو پھر خدا نخواستہ بہت نقصان ہو سکتا ہے۔

ہم نے صوبے میں میرٹ کو فروغ دیا ہے۔ آج پورے پاکستان میں شدید گرمی ہے، سورج سوا نیزے پر ہے، لیکن لوڈشیڈنگ نہ ہونے کے برابر ہے۔

ڈیموں میں پانی کی کمی ہے اور پانی سے بننے والی اڑھائی سے تین ہزار میگا واٹ بجلی کی بھی کمی ہے اس کے باوجود لوڈ شیڈنگ نہیں ہو رہی ۔ ذاتی پسند اور ناپسند سے بالا تر ہو کر گلے شکوے ایک طرف رکھ کر پاکستان کے تابناک مستقبل کے لئے تمام سٹیک ہولڈرز کے مابین ڈائیلاگ وقت کی ضرورت ہے۔مَیں ہمیشہ خوب سے خوب تر کی تلاش میں رہتا ہوں ، ابھی ہمیں بہت کام کرنا ہے۔

ہمارا مقابلہ کسی سے نہیں،بلکہ خدمت کے ساتھ ہے۔ قوم اسے ووٹ دے گی، جس نے خدمت کی ہے۔ عوامی خدمت کی سیاست میں جھوٹ اورالزام تراشی کی کوئی گنجائش نہیں۔

عوام نے فیصلہ کرنا ہے کہ کس نے ان کی خدمت کی اورکس نے وقت برباد کیا۔ اللہ تعالیٰ نے موقع دیا اورزندگی رہی تو کراچی اور پشاور کو لاہور اورسندھ و خیبر پختونخوا کو ترقی کے لحاظ سے پنجاب بنا دیں گے۔

یہ حقیقت ہے کہ پنجاب میں تعلیم اور صحت کے شعبوں میں اربوں روپے کے میگا پراجیکٹس سے انقلابی تبدیلیاں آئیں۔ پنجاب میں ہیلتھ کا کلچر تبدیل ہو گیا ہے۔ ہسپتالوں میں نجی انتظام کے ساتھ سی ٹی سکین اور میڈیکل ٹیسٹ مفت کیے جا رہے ہیں۔

پنجاب کے تمام ضلعی ہسپتالوں کی ازسرنو تعمیر و مرمت کی گئی ہے، نئے بلاک بنائے گئے ہیں، سرکاری ہسپتالوں میں اعلیٰ معیار کی بہترین ادویات فراہم کی جا رہی ہیں۔چیف سیکرٹری پنجاب کیپٹن (ریٹائرڈ) زاہد سعیدنے کہا ہے کہ صوبے کی تعمیروترقی، گورننس، تعلیم، صحت و دیگر شعبوں کی بہتری میں سرکاری افسران بالخصوص ڈپٹی کمشنرز کا کردار قابلِ ستائش ہے۔

یہ افسران کی انتھک محنت اور کوششوں کا نتیجہ ہے کہ پنجاب کی تیز رفتار ترقی ایک مثال بن چکی ہے۔ انتظامی افسران کی قابلیت اورپیشہ ورانہ مہارت کے باعث عوام کو بہترین خدمات کی فراہمی یقینی بنائی گئی۔عبداللہ خان سنبل کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ دن میں کام کرتے ہیں اور راتوں کو کتابیں پڑھتے ہیں اور مختلف منصوبوں کی تکمیل میں انہوں نے شبانہ روز محنت کی ہے۔

مزید : رائے /کالم