28 سالہ نوسر باز حسینہ نے 16 شادیاں کرلیں، دولہوں کے گھروں کا صفایا کردیا

28 سالہ نوسر باز حسینہ نے 16 شادیاں کرلیں، دولہوں کے گھروں کا صفایا کردیا
28 سالہ نوسر باز حسینہ نے 16 شادیاں کرلیں، دولہوں کے گھروں کا صفایا کردیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

میانوالی( ویب ڈیسک ) کالاباغ کے نواحی علاقہ میانہ والا کی 28 سالہ نوسرباز لڑکی نے اپنے والد کے ساتھ ملکر 16 شادیاں رچا لیں ،شادی کے بعد دولہا کی حسرتوں کا قتل کرتے ہوئے انکا گھر لوٹ لیتی تھی، سولہویں شادی کچھ عرصہ قبل تندر خیل کے رہائشی محبوب خان سے رچائی۔

روزنامہ دنیا کے مطابق محبوب نے بتایا کہ انکا طریقہ واردات یہ ہے کہ لڑکی کا باپ مختلف شہروں میں شادی کے خواہش مند بڑی عمر کے افراد ڈھونڈ کر ان تک پیغام پہنچاتا ہے۔خواہش مند ان کے گھر رشتہ لے کر جاتا ہے تو وہ لڑکی کو کنوارا ظاہر کر کے پروگرام کے مطابق اڑھائی تین لاکھ روپے کی رقم اور 5 تولے کے زیورات دولہے سے لکھوا لیتا ہے اور فوری شادی کر دی جاتی ہے لیکن کچھ ماہ بعد ہی شہناز اپنے شوہر سے ناراض ہو کرسامان سمیت اپنے باپ کے گھر واپس چلی جاتی ہے اور پھر دوسری جگہ شادی کا پروگرام بنا یا جاتا ہے ،اس طرح اب تک یہ حسینہ شادی کے نام پر مختلف شہروں کے 16 افراد کو لوٹ چکی ہے ،متاثرین میں ونجاری گلا خیل کا رہائشی غلام محی الدین، ترگ کا امیر محمد ، سرکیہ عیسیٰ خیل کا زبر نواز، سلطان خیل کا نور محمد ، نورپور تھل خوشاب کا لیاقت علی اور کچھ تندر خیل کا محبوب خان شامل ہیں۔ اس نے بتایا کہ ان لوگوں نے ایک گینگ بنا رکھا ہے۔

میری شہناز سے شادی ہوئی تو شک پڑنے پر میں نے اسکا الٹراساﺅنڈ کرایا تو وہ شادی سے پہلے ہی حاملہ تھی۔اس نے پریس کانفرنس میں الٹرا ساﺅنڈ رپورٹیں اور مختلف لوگوں کے شہناز کیساتھ نکاح نامے دکھاتے ہوئے چیف جسٹس ڈی آئی جی پولیس پنجاب اور ڈی پی او میانوالی سے اپیل کی ہے معاملہ کا فوری نوٹس لے کر منصفانہ انکوائری کرائی جائے اور تمام متاثرین کو نہ صرف انصاف دلایا جائے بلکہ اس گناہ کو مزید پھیلنے سے روکا جائے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /میانوالی /جرم و انصاف