شوال کاچاند نظر آگیاہے ، کل عیدالفطر منائی جائیگی

شوال کاچاند نظر آگیاہے ، کل عیدالفطر منائی جائیگی
شوال کاچاند نظر آگیاہے ، کل عیدالفطر منائی جائیگی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)شوال کاچاند نظر آگیاہے ، کل عید الفطر ہوگی، چاند نظر آنے کا اعلان مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے چیئر مین مفتی منیب الرحمان نے کیا ۔

تفصیلات کے مطابق مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس مفتی منیب الرحمان کی زیر صدارت کراچی میں ہوا جس میں جید علماءکرام سمیت محکمہ موسمیات ، پاک نیوی اور انتظامی افسران نے شرکت کی ۔ چاند کے لئے موصول ہونےوالی شہادتوں کے بعد مفتی منیب الرحمن  چاندنظر آنے کا اعلان کیا گیا ۔

مفتی منیب الرحمان نے شوال کا چاند نظر آنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میں اس موقع پر وزیر اعلیٰ کے پی محمود خان اور شوکت یوسفزئی سے کہنا چاہتا ہوں کہ اٹھارویں ترمیم ہو یا اٹھائیسویں ترمیم یہ تمام ترامیم دین کے تابع ہیں ، دین ان کے تابع کبھی نہیں ہوگا ۔ ان کا کہناتھا کہ کے پی کے کئی اضلاع میں بھی کل عید ہوگی ، میں یہ بھی کہنا چاہتا ہوں کہ جس پارٹی کی صوبے میں حکومت ہے ، اسی پارٹی کی مرکز میں بھی حکومت اور یہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ہواہے کہ ایسا کیا گیاہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مرکزی رویت ہلال کمیٹی کو تمام مکاتب فکر کے جید علماءکرام کا اعتماد حاصل ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں دین کی سربلندی قائم رہے گی اور ارباب اختیار کوچاہئے کہ دین کے ساتھ کھڑے ہوں۔
واضح رہے کہ خیبرپختونخوا میں صرف 28 روزوں کے بعد عید کر دی گئی، جگہ جگہ نماز کے اجتماعات ادا کئے گئے،صوبائی حکومت کی جانب سے سرکاری طور پر اعلان بھی کیا گیا، پشاور میں عید گاہ چارسدہ روڈ اور مسجد مہابت خان میں بڑے اجتماع ہوئے، گورنر اور وزیراعلیٰ نے بھی فرض ادا کرلیا۔پختونخوا کے دیگر علاقوں میں بھی نماز عید کی ادائیگی کی گئی، ملک کی سلامتی اور عالم اسلام کے اتحاد کے لیے خصوصی دعائیں مانگی گئیں، شمالی وزیرستان سمیت قبائلی اضلاع میں بھی عید کے بڑے اجتماعات کا انعقاد کیاگیا ۔
دوسری جانب پارہ چنار کے شہریوں نے وفاق کے ساتھ عید منانے کا اعلان کیا،ایبٹ آباد سمیت ہزارہ ڈویڑن کے عوام نے خیبر پختونخوا حکومت کے اعلان کو مسترد کر دیا، لوگوں نے وفاق کے ساتھ عید منانے کا اعلان کیا، ٹانک میں بھی آج انتیسواں روزہ رکھا گیا، ڈیرہ اسماعیل خان میں بھی عید کے حوالے سے عوام میں واضح تقسیم نظر آئی ۔

مزید :

قومی -