مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوج نے سر چ آپریشن کے بہانے مزید 3نوجوان شہید کر دیئے

مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوج نے سر چ آپریشن کے بہانے مزید 3نوجوان شہید کر دیئے

  

سرینگر (مانٹیرنگ ڈیسک) مقبوضہ کشمیر میں بزدل بھارتی فوج نے ماورائے عدالت مزید تین جوانوں کو شہید کر دیا، تین روز کے دوران شہید کشمیریوں کی تعداد 18 ہو گئی ہے۔ جنت نظیر وادی کے ضلع پلوامہ میں قابض بھارتی فوج نے داخلی اور خارجی راستوں کو بند کر کے سرچ آپریشن کیا، گھر گھر تلاشی کے دوران خواتین سے بدتمیزی کی گئی اور بزرگوں بچوں کو ہراساں کیا گیا جبکہ نوجوانوں کو غیر قانونی طور پر گرفتار کیا گیا۔سرچ آپریشن کے دوران قابض اور سفاک بھارتی فوج کی فائرنگ سے تین نوجوان شہید ہو گئے۔ یہ آپریشن ضلع پلوامہ کے علاقے کنگن میں کیا گیا۔ آپریشن کے دوران قابض بھارتی فوج نے شہر کے داخلی اور خارجی راستے بند کر دیئے اور انٹر نیٹ کی سروس بھی معطل کر دی۔گزشتہ روز بھی پلوامہ میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی میں 2 نوجوانوں کو شہید کردیا گیا تھا۔اس طرح 3 دنوں میں پلوامہ، پونچھ اور راجوڑی میں سرچ آپریشن کے دوران شہید ہونے والے کشمیری نوجوانوں کی تعداد 18 ہوگئی ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ سے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی جارحیت میں اضافہ ہوا ہے۔سرچ آپریشن کے نام پر بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی کی جا رہی ہے جبکہ کئی علاقوں میں تاحال کرفیو نافذ ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ روز پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں 15 کشمیریوں کے ماورائے عدالت قتل کی سخت الفاظ میں مذمت کی تھی۔ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے کہا کہ قابض بھارتی فورسز نے ایک روز میں 13 معصوم کشمیریوں کو قتل کیا، نام نہادانسداد دراندازی آپریشن کے نام پرکشمیریوں کاجعلی مقابلوں میں قتل کیاجا رہا ہے۔ عالمی برادری کورونا سے نبردآزما ہے تو بھارت کشمیر میں مظالم بڑھا رہا ہے۔دفتر خارجہ کے مطابق ایک ہی دن میں 13 کشمیریوں قتل بھارت انسانیت سوز مظالم و جرائم کا مظہر ہے۔ بھارتی حکام اپنے جرائم چھپانے کیلئے کشمیری مزاحمت کاروں کی تربیت، دراندازی کیالزام لگا رہے ہیں۔

نوجوان شہید

مزید :

صفحہ اول -