نجی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے پٹرول کی قلت پید ا کردی، بیشتر پمپوں پر پٹرول ختم

نجی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے پٹرول کی قلت پید ا کردی، بیشتر پمپوں پر پٹرول ختم

  

لاہور(این این آئی)نجی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے ایک بار پھر پٹرول کی قلت پیدا کر دی، شہر کے بیشتر پمپس پر پٹرول ختم ہو گیا جس کے بعد شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت لاہور میں پیٹرول کی طلب کے مطابق رسد ممکن نہیں ہو رہی جس کی وجہ سے بیشتر پیٹرول پمپس نے فروخت بند کردی ہے۔بتایا گیا ہے کہ نجی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کی جانب سے سپلائی متاثر ہونے پر پاکستان سٹیٹ آئل کو نجی کمپنیوں کا بوجھ بھی برداشت کرنا پڑ رہا ہے۔ پی ایس او کے پمپس پر پیٹرول دستیاب ہونے کی وجہ سے شہریوں کی قطاریں لگی ہوئی ہیں۔پاکستان پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے ذرائع کے مطابق لاہور کو روزانہ 28 سے 30 لاکھ لٹر پٹرول درکار ہے تاہم نجی کمپنیوں کی جانب سے بروقت سپلائی نہ ہونے سے 5 سے 8لاکھ لٹر پٹرول کی کمی کا سامنا ہے۔

پٹرول

اسلام آباد/لاہور(آن لائن،لیڈی رپورٹر)آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی(اوگرا)نے ملک میں پیٹرولیم مصنوعات کی فراہمی میں تعطل کے باعث6 آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے آج جواب طلب کرلیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ترجمان اوگرا عمران غزنوی کا کہنا ہے کہ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی نے شیل پاکستان لمیٹڈ، اٹک پیٹرولیم لمیٹڈ اور ٹوٹل پارکو پاکستان لمیٹڈ کو نوٹس جاری کیے۔بعدازاں وزیراعظم سٹیزن پورٹل پر ریٹیل آؤٹ لیٹس پر تیل کی فراہمی میں قلت کی شکایات پر اوگرا نے مزید 3آئل مینوفیکچرنگ کمپنیز گیس اینڈ آئل، پوما اور ہیسکول کو بھی شوکاز نوٹس جاری کردیا۔علاوہ ازیں اوگرا کی جانب سے چاروں صوبائی، گلگت اور آزاد کشمیر کے چیف سیکرٹریز کو ارسال کردہ خط میں آگاہ کیا گیا کہ میڈیا میں لائسنس یافتہ او ایم سیز کے پیٹرول پمپس پر پیٹرولیم مصنوعات کی قلت سے متعلق رپورٹ کیا جارہا ہے جس کے باعث عوام کو مشکلات کا سامنا ہے۔خط میں کہا گیا کہ وزرات توانائی کی ہدایات کی روشنی میں اوگرا نے پہلے ہی او ایم سیز کو مصنوعات کی دستیابی یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی تھی۔اوگرا نے کہا کہ موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے متعلقہ ڈسٹرکٹ کوآرڈینیشن آفیسرز کو اپنے دائرہ کار میں ذخیرہ اندوزی میں ملوث پیٹرول پمپس کے خلاف پرائس کنٹرول اینڈ پریوینشن آف پروفیٹرنگ اینڈ ہورڈنگ ایکٹ 1977 کے تحت کارروائی کرنے کی ہدایت کی جاتی ہے۔علاوہ ازیں ایسے ریٹیل آٹ لیٹس کی تفصیلات فراہم کرنے کی درخواست کی جاتی ہے تاکہ اوگرا، او ایم سیز یا ڈیلر کے خلاف ضروری کارروائی کرسکے۔دوسری جانب پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری خواجہ عاطف کا کہنا ہے کہ لاہور میں پٹرولیم مصنوعات کی قلت 85 فیصد تک پہنچ گئی، شہر میں پٹرول وڈیزل کی یومیہ ضرورت 30 لاکھ لٹر ہے جبکہ سپلائی صرف 5 لاکھ لٹر روزانہ تک محدود ہوگئی۔

اوگرا/نوٹس

مزید :

صفحہ اول -