عدالتی حکم کی آڑ لے کر محکموں کو مانی نہیں کرنے دینگے: چیف جسٹس

عدالتی حکم کی آڑ لے کر محکموں کو مانی نہیں کرنے دینگے: چیف جسٹس

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے قراردیاہے کہ عدالتی حکم کی آڑ لے کر محکموں کو من مانی کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی،چیف جسٹس نے یہ ریمارکس راولپنڈی میں ڈھڈھوچہ ڈیم کے ٹھیکہ کی بولی کے لئے عائد شرائط کے خلاف دائردرخواست کی سماعت کے دوران دیئے،عدالت نے ڈیم کے بڈنگ پراسس کو عدالتی فیصلے سے مشروط کر تے ہوئے کیس کی مزید سماعت17جون پر ملتوی کردی،فاضل جج نے اس ڈیم سے متعلق تمام درخواستیں یکجاکرنے ہدایت بھی کی ہے،عدالت نے سرکاری وکیل کو مخاطب کرکے کہا کہ(بقیہ نمبر39صفحہ6پر)

ڈیم کی تعمیر کے ٹھیکہ کا تمام عمل شفاف ہونا چاہیے، ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہا کہ اس معاملے میں ایسا کچھ نہیں،قانون کے مطابق کام کررہے ہیں، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ پھر تمام ریکارڈ طلب کرلیتے ہیں پتہ چل جائے گا، درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ درخواست گزار کمپنی کو تکنیکی بنیادوں پر بولی میں شمولیت سے روکا جارہاہے،ڈیم کے ٹھیکہ کے لئے ابتدائی بولی کی رقم 3 ارب 80 کروڑ روپے مقرر کی گئی ہے،حکومت نے ایک کمپنی کو نوازنے کے لئے بولی کی شرائط سخت رکھی ہیں، مختلف شعبوں میں مہارت کے نمبر مقرر کرکے 45 نمبر حکومت نے اپنے پاس رکھ لئے ہیں،یہ تمام عمل بدنیتی پر مبنی ہے۔

ڈیم بولی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -