کروناوائرس:60سے زائد تصدیق شدہ کیس، کوٹ ادو میں تھرتھلی

کروناوائرس:60سے زائد تصدیق شدہ کیس، کوٹ ادو میں تھرتھلی

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)کوٹ ادومیں کورونا کے متاثرین تیزی سے بڑھنے لگے، کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 60 سے زائد ہو گئی تفصیل کے مطابق کوٹ ادو میں بھی کورونا وائرس کے مریضوں میں تیزی سے اضافہ شروع ہو گیا ہے اور گزشتہ 2روز کے دوران 40مریضوں کے کورونا ٹیسٹ پازیٹوآگئے ہیں جبکہ مجموعی طور پر کوٹ ادو میں کورونا وائرس سے متاثرہ کی تعداد60 سے زائد ہو گئی ہے،تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں ایک ڈاکٹر شاہد حسین گورمانی کی بیوی، ڈاکٹر (بقیہ نمبر20صفحہ6پر)

شہرام کی کی والدہ جسے طیب اردگان ہسپتال مظفرگڑھ داخل کرا دیا گیا ہے جس کا وہاں ٹیسٹ نیگٹوآگیا ہے اور ایک محمد حفیظ ڈسپنسر میں کرونا کے ٹیسٹ مثبت آگئے جبکہ دونوں ڈاکٹروں کے سیمپل اور ڈسپنسر کی فیملی کے سیمپل آج بھیجے جائیں گے،تمام متاثرہ کو گھروں میں کورونٹائین کردیا گیا،دوسری جانب ہسپتال کے عملہ میں شدید تشویش پائی جا رہی ہے،وارڈ نمبر14ای بخاری روڈ محلہ غریب آباد کے رہائشی میونسپل کمیٹی کے ملازم سید قمر عباس نقوی اور اسکی پوری فیملی کا کورونا ٹیسٹ پازیٹو آگیا ہے،ان مریضوں کی اطلاع جب انتظامیہ کو دی گئی تو انتظامیہ نے کوئی خاص توجہ نہ دی اور متاثرہ قمر عباس کی حالت تشویش ناک ہونے پر اسے قرنطینہ سنٹر بھی منتقل نہیں کیا جا گیا جبکہ متاثرہ علاقہ میں کو ئی احتیاطی تدابیر بھی اختیار نہیں کی گئیں جسکی وجہ سے محلہ غریب آباد کے لوگوں میں خوف وہراس پایا جا رہا ہے جبکہ اس گلی کے مکین حفاظتی انتظامات نہ ہونے پر گھروں کو چھوڑ کر حفاظتی مقامات پر شفٹ ہو رہے ہیں،مکینوں نے ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ انجینئرامجد شعیب خان ترین سمیت تحصیل انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ متاثرہ مریضوں کو قرنطینہ سنٹر منتقل کیا جائے اور محلہ کی گلی میں سپرے کرایا جائے تاکہ مکین بلا خوف وخطر وہاں رہائش پذیر ہو سکیں،اس حوالے سے ڈاکٹر عمرفاروق بلوچ نے کہا ہے کہ کوٹ ادو میں کورونا کی بڑھتی ہوئی وباء قابل تشویش ہے،وہ پچھلے 2 ماہ سے عوام سے اپیل کررہے ہیں کہ عوام احتیاط کریں، لیکن عوام ہے اس بات کو سمجھ نہیں رہی،انہوں نے کہا کہ اس پر حکومت کی بھی نا اہلی ہے کہ عید پہ لوگوں کو نقل و حرکت کی اجازت دی جس سے یہ بحران بڑھا اور جولائی کے پہلے ہفتے تک ہر گلی محلہ اس کا شکار ہو گا اگر عوام اس کو مذاق سمجھتی رہی،میوہ ایک بار پھر عوام سے گزارش کرتے ہیں کہ کسی سے ہاتھ نہ ملائیں،گلے نہ ملیں،با بار صابن سے ہاتھ دھوئیں اورموجودہ صورتحال میں ماسک اور سینیٹائزرز کا استعمال یقینی بنایا جائے، انہوں نے انتظامیہ سے بھی اپیل کی کہ شہر بھر میں کورونا کی بڑھتی ہوئی تعداد کے باعث حفاظتی بدابیر کیلئے سختی کی جائے اور شہر بھر میں انفیکشن سپرے بھی کرایا جائے۔

تھرتھلی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -